Saturday , April 21 2018
Home / ہندوستان / لشکر طیبہ کا ایک اور معاون گرفتار، پولیس ریمانڈ پر بھیجا گیا

لشکر طیبہ کا ایک اور معاون گرفتار، پولیس ریمانڈ پر بھیجا گیا

نئی دہلی، 7 فروری (سیاست ڈاٹ کام) قومی تفتیشی ایجنسی این آئی اے نے ضلع ہری دوار کے بکن پور کے رہنے والے عبدالصمد (22 سال) کو گرفتار کرلیا جس کے خلاف لشکر طیبہ کی سرگرمیوں میں شامل ہونے کا ایک کیس 2017 میں درج کیا گیا تھا۔ عبدالصمد کو این آئی اے کی خصوصی عدالت نئی دہلی میں منگل کو پیش کیا گیا جہاں اس کو چھ دن کے لئے این آئی اے کی پولیس حراست میں بھیج دیا گیا۔ عبدالصمد پر مظفر نگر، دیوبند اور رڑکی میں حوالہ کاروبار کرنے والوں میں سرفہرست ہونے کا الزام ہے ۔ اس کو اپنے کزن کے توسط سے سعودی عربیہ میں مقیم لشکر طیبہ کے فائننسر کے لئے کام کرنے والا بھی بتایا گیا ہے ۔
عبدالصمد نے نومبر 2017 میں مظفرنگر اترپردیش کے حوالہ کاروباریوں سے تین لاکھ پچاس ہزار روپئے ساتھی ملزم شیخ عبدالنعیم کو فراہم کرنے کے لئے اکٹھا کئے ۔ اس پر پاکستان میں مقیم اپنے سرپرست عبدل عرف ریحان کے اشارے پر ایک فعال رکن کی حیثیت سے بہار، اوڑیسہ، اترپردیش اور جموںکشمیر لشکر طیبہ کے اڈے قائم کرنے کا بھی الزام ہے ۔
عبدالصمد اس معاملہ میں پانچواں ملزم ہے ۔ چار دیگر ملزمین میں جن کو اس کیس میں گرفتار کیا گیا ہے ، اورنگ آباد کا شیخ عبدالنعیم عرف سہیل خان، گوپال گنج سریا کا دھانو راجا، پلوامہ جموں کشمیر کا توصیف احمد ملک اور بہار گوپال گنج کا محفوظ عالم شامل ہے ۔

TOPPOPULARRECENT