Tuesday , September 18 2018
Home / جرائم و حادثات / لشکر طیبہ کا رُکن شیخ عبدالنعیم پولیس تحویل سے فرار

لشکر طیبہ کا رُکن شیخ عبدالنعیم پولیس تحویل سے فرار

رائے گڑھ میں چلتی ٹرین سے چھلانگ لگانے میں کامیاب ، پولیس مصروف تحقیقات

رائے گڑھ میں چلتی ٹرین سے چھلانگ لگانے میں کامیاب ، پولیس مصروف تحقیقات
حیدرآباد۔ 25 اگست (سیاست نیوز) مکہ مسجد بم دھماکے کیس میں ماخوذ لشکر طیبہ کے مبینہ رکن شیخ عبدالنعیم عرف سمیر جسے حال ہی میں حیدرآباد کی ایک عدالت نے بَری کیا تھا، مغربی بنگال کی پولیس تحویل سے فرار ہوگیا۔ ذرائع نے بتایا کہ نعیم کو بنگال آرمڈ فورس کا عملہ ڈم ڈم جیل سے ممبئی کیس کی سماعت کے لئے منتقل کررہا تھا کہ وہ چھتیس گڑھ کے رائے گڑھ علاقہ میں چلتی ٹرین سے چھلانگ لگاکر فرار ہوگیا۔ پولیس نے اس سلسلے میں مقدمہ درج کرکے نعیم کی تلاش شروع کردی ہے۔ نعیم کو سال 2007ء میں مکہ مسجد بم دھماکہ کیس کی تحقیقات کرنے والی اسپیشل انوسٹی گیشن سیل (ایس آئی سی) نے 6 جون کو ممبئی جیل سے حیدرآباد پی ٹی وارنٹ پر منتقل کیا تھا اور اس نے فرضی شناخت ظاہر کرتے ہوئے حیدرآباد پاسپورٹ آفس سے پاسپورٹ حاصل کرنے کی کوشش کی تھی۔ حیدرآباد پولیس نے سنٹرل کرائم اسٹیشن (سی سی ایس) میں اس کے خلاف پاسپورٹ ایکٹ اور دھوکہ دہی کے تحت ایک مقدمہ درج کرتے ہوئے اسے اپنی تحویل میں لے کر مہانکالی پولیس اسٹیشن میں محروس رکھا تھا۔ نعیم پولیس اسٹیشن میں رفع حاجت کے بہانے 15 فیٹ اونچی دیوار سے چھلانگ لگاکر فرار ہوگیا، لیکن ٹاسک فورس نے اسے فوری گرفتار کرلیا تھا اور پولیس تحویل سے فرار ہونے کی کوشش کے سلسلے میں بھی ایک مقدمہ درج کیا تھا۔ سی سی ایس نے لشکر طیبہ کے مبینہ رکن کے خلاف ایک اور مقدمہ درج کیا تھا جس میں ملک کے خلاف مجرمانہ سازش اور غیرقانونی سرگرمیوں کا الزام عائد کیا تھا، لیکن جون 2013ء میں نامپلی کریمنل کورٹ کے چوتھے ایڈیشنل میٹروپولیٹن سیشن جج نے پولیس تحویل سے فرار ہونے کے کیس میں اسے بَری کردیا تھا اور بعدازاں جاریہ سال اپریل میں نعیم کے علاوہ شعیب جاگیردار، سید عمران خان اور رفیع الدین احمد کو بھی پاسپورٹ ایکٹ کیس میں بری کردیا۔ نعیم کے خلاف حیدرآباد میں مجرمانہ سازش کا ایک مقدمہ زیرالتواء ہے جبکہ ممبئی میں سلسلہ وار بم دھماکے اور مغربی بنگال میں بھی ایک مقدمہ زیرالتواء ہے۔ مہاراشٹرا کے ضلع اورنگ آباد سے تعلق رکھنا والا شیخ عبدالنعیم کو سال 2007ء میں بارڈر سکیورٹی فورس عملہ نے تین پاکستانی شہریوں کے ہمراہ اس وقت گرفتار کرلیا تھا جب وہ بنگلہ دیش سرحد سے ہندوستان میں غیرقانونی طور پر داخل ہونے کی کوشش کررہا تھا۔

TOPPOPULARRECENT