Saturday , January 20 2018
Home / دنیا / لطائف

لطائف

٭ ریاضی کے اُستاد (بچوں سے): اگر کسی جگہ بارہ بھیڑیں بندھی ہوں اور ان میں سے تین بھاگ جائیں تو کتنی بھیڑیں باقی بچیں گی؟ ایک بچے نے کھڑے ہوکر کہا: ایک بھی نہیں! اُستاد (ناراضگی سے): لگتا ہے کہ تم ریاضی کے متعلق کچھ بھی نہیں جانتے؟ بچے نے جواب دیا: اور مجھے لگتا ہے کہ آپ بھیڑوں کے متعلق کچھ بھی نہیں جانتے!

٭ ریاضی کے اُستاد (بچوں سے): اگر کسی جگہ بارہ بھیڑیں بندھی ہوں اور ان میں سے تین بھاگ جائیں تو کتنی بھیڑیں باقی بچیں گی؟
ایک بچے نے کھڑے ہوکر کہا: ایک بھی نہیں!
اُستاد (ناراضگی سے): لگتا ہے کہ تم ریاضی کے متعلق کچھ بھی نہیں جانتے؟
بچے نے جواب دیا: اور مجھے لگتا ہے کہ آپ بھیڑوں کے متعلق کچھ بھی نہیں جانتے!
٭٭ انسپکٹر: تم نے کمپنی کے منیجر کا ہاتھ کیوں جلایا؟
نوجوان: سَر، صاحب سے نوکری مانگنے گیا تو وہ بولے کہ پہلے مٹھی گرم کرو۔ میں نے جلتا ہوا کوئلہ ان کے ہاتھ پر رکھ دیا!
٭٭ دکان کا مالک (نئے مالک سے): تمہیں منشی جی نے کام سمجھا دیانا؟
ملازم: جی ہاں! انھوں نے مجھے سمجھا دیا ہے کہ جب میں آپ کو دکان کی طرف آتا ہوا دیکھوں تو انھیں فوراً جگادوں!
٭٭ ایک لائبریرین کو آدھی رات کے وقت فون آیا ’’جناب! کیا آپ مجھے بتاسکتے ہیں کہ صبح لائبریری کس وقت کھلے گی؟
لائبریرین غصّے سے بولا ’’کیوں؟ کیا آپ کو صبح سب سے پہلے لائبریری میں داخل ہونا ہے؟
وہ شخص کہنے لگا: ’’ارے، صاحب! داخل کس کو ہونا ہے؟ مجھے تو یہاں سے باہر نکلنا ہے۔ آپ جلد بازی میں مجھے یہاں بند کرکے چلے گئے!

TOPPOPULARRECENT