Tuesday , August 14 2018
Home / Top Stories / لندن میں وزیراعظم نریندر مودی کے دورہ کیخلاف احتجاج

لندن میں وزیراعظم نریندر مودی کے دورہ کیخلاف احتجاج

’مودی واپس جاؤ، مودی دہشت گرد ہے جیسے نعرے‘ ، کشمیر کی 8 سالہ بچی کی تصویر کیساتھ مظاہرے
لندن ۔ 18 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) وزیراعظم نریندر مودی کے دورہ برطانیہ کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے مقامی افراد نے لندن کی پارلیمنٹ کے باہر مظاہرے کئے۔ مظاہرین نے مودی کی مخالفت میں نعروں سے ان کا استقبال کیا۔ مظاہرین میں سے بیشتر مسلمان اور سکھ تھے جنہوں نے مذہب کی بنیاد پر مظالم ڈھانے کا سلسلہ بند کرنے کا بھی مطالبہ کیا۔ مظاہرین نے وزیراعظم مودی کے خلاف ’’مودی واپس جاؤ اور مودی دہشت گرد ہے‘‘ جیسے نعرے بھی لگائے۔ احتجاج کرنے والوں نے اپنے ہاتھوں میں بیانر بھی اٹھائے رکھے تھے جس میں دہشت گردی کو روکنے کا مطالبہ کیا گیا تھا۔ مظاہرین کے ہاتھوں میں دوسرے پوسٹرس بھی تھے۔ بعض پوسٹروں میں کشمیر کی 8 سالہ بچی آصفہ کی تصویر بھی بنی ہوئی تھی۔ جسے زیادتی کے بعد قتل کردیا گیا تھا۔ احتجاج میں شامل سکھ افراد نے آزادی کا مطالبہ کرتے ہوئے نعرے لگائے۔ سکھ تاجر دیپندر جیت نے کہا کہ مختلف گروپس نے آج اس مظاہرہ میں شرکت کی۔ ان کا کہنا تھا کہ مودی کے دورحکومت میں جو کچھ ہورہا ہے وہ ناقابل قبول ہے۔ ہندوستان میں اقلیتوں کا قتل کیا جارہا ہے۔ معصوم بچیوں کی عصمت ریزی کی جارہی ہے۔ حکومت ان واقعات کو روکنے میں ناکام ہے۔ وزیراعظم نریندر مودی کے دورہ برطانیہ کے دوران حکومت برطانیہ سے تقریباً دیڑھ ارب ڈالر کے سرمایہ کاری معاہدوں پر دستخط کی جائے گی۔ واضح رہیکہ ہندوستان میں عصمت ریزی اور قتل کے بڑھتے واقعات کے درمیان وزیراعظم کا یہ بیرونی دورہ ہے۔ یوپی کے شہر اناؤ میں بی جے پی رکن اسمبلی کی جانب سے ایک نوجوان لڑکی کی عصمت ریزی اور کشمیر میں 8 سالہ آصفہ کی عصمت ریزی اور قتل کے واقعات کے خلاف ملک بھر میں غم و غصہ کی لہر پائی جاتی ہے۔ اسی سلسلہ کی کڑی آج لندن کی سڑکوں پر احتجاج کی شکل میں دیکھی گئی۔

TOPPOPULARRECENT