Sunday , April 22 2018
Home / ہندوستان / لنگایت / ویرا شیوا کو مذہبی اقلیت قرار دینے کی سفارش

لنگایت / ویرا شیوا کو مذہبی اقلیت قرار دینے کی سفارش

کرناٹک کی کانگریس حکومت اکسپرٹ پیانل کی سفارشات قبول کرکے مرکز سے رجوع

بنگلورو 19 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) اسمبلی چناؤ کا سامنا کرنے والی ریاست کرناٹک کی کانگریس حکومت نے ایک اہم اقدام میں آج فیصلہ کیاکہ مرکز سے یہ سفارش کی جائے کہ عددی و سیاسی اعتبار سے طاقتور لنگایت اور ویرا شیوا لنگایت کمیونٹی کو مذہبی اقلیت کا درجہ عطا کیا جائے۔ کابینی اجلاس کے بعد میڈیا والوں کو روئیداد سے واقف کرواتے ہوئے وزیر قانون ٹی بی جئے چندرا نے کہاکہ کابینہ نے اِس مسئلہ پر ریاستی حکومت کے تشکیل کردہ اکسپرٹ پیانل کی سفارشات کو قبول کرلیا جائے۔ یہ فیصلہ طویل صلاح مشورہ غور و خوض کے بعد کیا گیا۔ پیانل کے مطابق لنگایتوں اور ویرا شیوا لنگایتوں کو بارہویں صدی کے سماجی مسلح بسویشورا کے فلسفے کو ماننے والے لوگ سمجھا جاتا ہے۔ جئے چندر نے کہاکہ اِس فیصلے کا موجودہ اقلیتوں کو حاصل حقوق اور مفادات پر اثر نہیں پڑے گا۔ ویرا شیوا / لنگایت عقیدہ رکھنے والوں کو علیحدہ منصب کا درجہ دینے کا مطالبہ اِس کمیونٹی کی طرف سے سامنے آیا تھا کیوں کہ دونوں برادریوں میں ناراضگی پیدا ہوگئی تھی کہ اُن سے امتیاز برتا جارہا ہے۔ اکھل بھارت ویرا شیوا مہا سبھا زیرقیادت گوشے نے علیحدہ مذہبی درجہ کا مطالبہ کیا اور دعویٰ کیاکہ ویرا شیوا اور لنگایت طبقات یکساں ہیں۔ جبکہ دیگر گروپ دونوں کو لنگایت کے تحت ایک ہی زمرہ میں شامل کرانے کا خواہاں ہے۔ اُن کا ماننا ہے کہ ویرا شیوا دراصل 7شیوا طبقات میں سے ہے، جو ہندومت کا حصہ ہیں۔ حالیہ عرصہ میں بعض لنگایتوں نے یہ بھی بیان کیا ہے کہ وہ ویرا شیوا برادری کو اپنے زمرہ میں شامل کرنے کے تعلق سے کھلا ذہن رکھتے ہیں لیکن لنگایت کے نام پر کوئی مفاہمت نہیں ہوسکتی۔ کرناٹک ریاستی اقلیتی کمیشن نے ریٹائرڈ ہائیکورٹ جج ایچ این ناگموہن داس کی سربراہی میں 7 رکنی کمیٹی اِس مسئلہ پر تشکیل دی تھی جس نے اپنی رپورٹ 2 مارچ کو پیش کردی۔

TOPPOPULARRECENT