Thursday , October 18 2018
Home / Top Stories / لوک سبھا الیکشن : اسلام بمقابلہ ہندوتوا، ہندوستان بمقابلہ پاکستان

لوک سبھا الیکشن : اسلام بمقابلہ ہندوتوا، ہندوستان بمقابلہ پاکستان

صرف چند مسلمان ہی محب وطن، کمسن کی عصمت ریزی کے ملزم کے حامی بی جے پی رکن اسمبلی کی زہرافشانی

l ’’بی جے پی کی جیت پر ملک میں جشن اور اپوزیشن کی جیت پر پاکستان میں بینڈ باجے ہوں گے
l ہندو راشٹر کو قبول کرنے والے مسلمان ہی رہ پائیں گے دیگر مسلمانوں کو دوسرے ملک میں پناہ لینا ہوگا

بلیا 13 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) اترپردیش میں بی جے پی کے ایک رکن اسمبلی سریندر سنگھ نے کمسن لڑکی کی عصمت ریزی کرنے والے اپنی پارٹی کے رکن اسمبلی کی پرزور دفاع کرنے کے دو دن بعد ہی ایک اور متنازعہ ریمارک میں کہاکہ 2019 ء کے لوک سبھا انتخابات اسلام بمقابلہ ہندوتوا اور ہندوستان بمقابلہ پاکستان کے خطوط پر ہوں گے۔ بیریا سے تعلق رکھنے والے بی جے پی کے اس رکن اسمبلی نے ایک 17 سالہ لڑکی کی مبینہ عصمت ریزی کرنے والے اپنی پارٹی کے رکن اسمبلی کلدیپ سنگھ سنگر کی مدافعت کرتے ہوئے 11 اپریل کو ایک تنازعہ پیداکردیا تھا۔ سریندر سنگھ نے 11 اپریل کو ایک تقریب کے موقع پر اخباری نمائندوں سے غیر رسمی بات چیت کرتے ہوئے کہا تھا کہ ’’آپ ہی مجھے بتایئے کہ تین بچوں کی ماں کی عصمت ریزی کون کرے گا؟ اُنھیں (کلدیپ سنگھ) کو غلط طور پر پھنسایا گیا ہے‘‘۔ اس ریمارک کے دو دن بعد سریندر سنگھ نے کل رات ایک جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ 2019 ء کے انتخابات اسلام بمقابلہ ہندوتوا اور ہندوستان بمقابلہ پاکستان کے خطوط پر ہوں گے۔ چنانچہ ملک کے معزز عوام کو یہ فیصلہ کرنا ہوگا کہ آیا اسلام کی جیت ہوگی یا ہندوتوا کی جیت ہوگی‘‘۔ اُنھوں نے مزید کہاکہ ’’(آپ کو یہ) فیصلہ کرنا ہوگا کہ آیا بددیانت افراد فاتح ہوں گے یا پھر (نریندر) مودی کی دیانتداری کی فتح ہوگی‘‘۔ زعفرانی جماعت کے قانون ساز نے مزید کہاکہ اگر بی جے پی کو فتح ہوتی ہے تو ملک کا عوام اس کا جشن منائیں گے اور اگر اپوزیشن کی فتح ہوگی تو پاکستان میں بینڈ باجے بجائے جائیں گے۔ ’’عوام کو فیصلہ کرنا ہوگا کہ ٓیا وہ ہندوتوا یا اسلام کے ساتھ ہیں۔ بھارت بھکتی کا وبھکتی (انتشار پسند قوتوں) کے درمیان مقابلہ ہوگا‘‘۔ سریندر سنگھ نے اسلام اور مسلمانوں کے خلاف زہر افشانی کا سلسلہ جاری رکھتے ہوئے مزید کہاکہ ہندوستان ایک مرتبہ ہندو راشٹر بن جائے گا تو یہاں صرف وہی مسلمان رہیں گے جو ہندو تہذیب پر عمل کرتے ہیں۔ بی جے پی رکن اسمبلی نے کہاکہ ’’صرف چند ہی مسلمان ہیں جو محب وطن ہیں۔ ہندوستان ایک مرتبہ ہندو راشٹر بن جائے تو صرف وہی مسلمان ہندوستان میں رہیں گے جو ہماری ہندو تہذیب پر عمل کرتے ہیں اور جو ایسا نہیں کریں گے اُنھیں کسی دوسرے ملک میں پناہ لینا ہوگا‘‘۔

TOPPOPULARRECENT