Wednesday , June 20 2018
Home / سیاسیات / لوک سبھا سے کانگریس کا واک آؤٹ شرمناک: اننت کمار

لوک سبھا سے کانگریس کا واک آؤٹ شرمناک: اننت کمار

نئی دہلی، 19 دسمبر (سیاست ڈاٹ کام) وزیر اعظم نریندر مودی سے گجرات انتخابات کے دوران سابق وزیر اعظم منموہن سنگھ، سابق نائب صدر حامد انصاری اور سابق فوجی سربراہ پر لگائے گئے الزامات کے لئے معافی مانگنے کی مانگ کو لے کر آج کانگریسی ممبران نے لوک سبھا میں جم کر ہنگامہ کیا اور وقفہ صفر کے دوران ایوان سے واک آؤٹ کر گئے ۔وقفہ صفر ختم ہونے کے ٹھیک پہلے پارلیمانی امور کے وزیر اننت کمار نے کانگریسی ارکان کے رویہ کی مذمت کی اور الزام لگایا کہ انہوں نے اسپیکر کی چیئر کو نظرانداز کرنے کی کوشش کی ہے ۔ مسٹر کمار نے کہا “کانگریسی ارکان نے آج جو کیا وہ شرمناک اور قابل مذمت ہے ۔ انہوں نے اسپیکر کی کرسی کے پاس آکر ایوان کی متوازی کارروائی چلانے کی کوشش کی۔ ایک کے بعد ایک کانگریسی رکن بولنے لگے ”۔مسٹر اننت کمار کے اس بیان کے دوران کئی رکن ‘شرم کرو، شرم کرو’ کے نعرے لگاتے رہے ۔ مسٹر کمار نے کہا کہ پارلیمنٹ کے سینئر رکن ملک ارجن کھڑگے نے بھی صدر کی اجازت کے بغیر ایک مکمل تقریر پڑھنے کی کوشش کی جس کی ہم سخت مذمت کرتے ہیں۔اس سے پہلے آج صبح ایوان کی کارروائی شروع ہوتے ہی وزیر اعظم سے معافی مانگنے کو لے کر کانگریسی ارکان کی طرف سے بھاری ہنگامہ کرنے کی سے وجہ اسپیکر سمترا مہاجن نے کارروائی آدھے گھنٹے کے بعد 12 بجے تک کے لئے ملتوی کر دی تھی۔ کارروائی دوبار شروع ہونے پر کانگریسی ارکان نے دوبارہ نعرے بازی شروع کر دی اور صدر کی کرسی کے قریب آکر ‘وزیر اعظم معافی مانگو’، ‘جھوٹے الزام لگانا بند کرو’ اور ‘سابق وزیر اعظم کی توہین برداشت نہیں کریں گے ‘ جیسے نعرے لگاتے رہے ۔ اسپیکر نے اس ہنگامے کے درمیان ہی وقفہ صفر کی کارروائی جاری رکھی اور کانگریسی ارکان کے واک آؤٹ کرنے کے بعد کاروائی بغیر کسی رکاوٹ کے چلی۔ وقفہ صفر کی کارروائی کے اختتام پر مسٹر اننت کمار نے اپنا بیان دیا۔

TOPPOPULARRECENT