Monday , November 20 2017
Home / ہندوستان / ’’لو جہاد‘‘ پر ڈی جی پی کا موقف آشکار

’’لو جہاد‘‘ پر ڈی جی پی کا موقف آشکار

تاحال کسی واقعہ کا انکشاف نہیں ہوا ، سپریم کورٹ کے حکم پر تحقیقات
تھرووننتاپورم۔ 27 اگست (سیاست ڈاٹ کام) کیرالا میں ’’لو جہاد‘‘ کے واقعات سے متعلق الزامات کے درمیان ریاستی پولیس سربراہ نے کہا کہ تاحال ایسے کوئی اعداد یا تفصیلات نہیں ہیں جن سے اس کی توثیق کی جاسکتی ہے۔ ڈائریکٹر جنرل پولیس (ڈی جی پی) لوک ناتھ بہیرا نے ذرائع ابلاغ کے ایک گوشہ سے آنے والی ان اطلاعات کی تردید کرتے ہوئے اس موقف کا اظہار کیا۔ قبل ازیں اطلاعات میں ڈی جی پی کے حوالے سے کیرالا میں ’’لو جہاد‘‘ کے واقعات پیش آنے کی توثیق کی گئی تھی، تاہم انہوں نے کہا کہ اس ضمن میں مختلف گوشوں سے منظر عام پر آنے والے ان الزامات پر پولیس نظر رکھی ہوئی ہے۔ لوک ناتھ بہیرا نے اپنے بیان میں کہا کہ ذرائع ابلاغ کے ایک گوشہ میں یہ دعویٰ کیا گیا ہے کہ ریاستی پولیس سربراہ نے کیرالا میں ’’لو جہاد‘‘ کے واقعات پیش آنے کی توثیق کی ہے جو صحیح نہیں ہے بلکہ مکمل طور پر غلط فہمی کا نتیجہ ہے۔ ڈی جی پی نے کہا کہ سپریم کورٹ نے ایک مقدمہ میں اس قسم کے الزامات کی تحقیقات کرنے کا حکم دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ چنانچہ ہماری ذمہ داری ہے کہ اس بات کا پتہ چلایا جائے کہ یہ صحیح یا غلط۔ تاحال ہمیں ایسی کوئی تفصیلات یا اعداد موصول نہیں ہوئے ہیں جن کی بنیاد پر اس بات کی توثیق کی جاسکے کہ آیا نام نہاد ’’لو جہاد‘‘ کیرالا میں جاری ہے۔

TOPPOPULARRECENT