Friday , December 15 2017
Home / ہندوستان / لکھنؤ میں معطل آئی پی ایس عہدیدار کی قیامگاہ پر دھاوا غیر محسوب اثاثہ جات کیس میں ویجلنس ٹیم کی کارروائی

لکھنؤ میں معطل آئی پی ایس عہدیدار کی قیامگاہ پر دھاوا غیر محسوب اثاثہ جات کیس میں ویجلنس ٹیم کی کارروائی

لکھنؤ۔/13اکٹوبر، ( سیاست ڈاٹ کام ) ایک معطل شدہ آئی پی ایس آفیسر امیتابھ ٹھاکر کی قیامگاہ پر آج اسوقت ڈرامائی مناظر دیکھے گئے جب ویجلنس ڈپارٹمنٹ کے عملے نے غیر محسوب اثاثہ جات کے کیس میں ان کے مکان کی اچانک تلاشی لی۔ گومتی نگر کی قیامگاہ کے باہر میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے ٹھاکر نے کہا کہ ویجلنس ٹیم نے میرے مکان پر دھاوا کیا ہے جبکہ ڈائرکٹر ویجلنس بھلا پرساد سنگھ حکمران جماعت کے کارکن کی حیثیت سے کام کررہے ہیں چونکہ میں نے ملائم سنگھ یادو کے خلاف ایف آئی آر درج کروائی ہے جس کی وجہ سے انہیں ہراساں کیا جارہا ہے۔ ویجلنس ڈپارٹمنٹ نے گزشتہ ماہ ٹھاکر کے خلاف ایف آئی آر درج کروائی ہے کہ وہ جائز ذرائع آمدنی سے کہیں زیادہ اثاثہ جات رکھتے ہیں جبکہ امیتابھ ٹھاکر نے بھی گزّتہ ہفتہ ویجلنس ڈپارٹمنٹ کے خلاف تحقیقاتی رپورٹ میں حقائق کو غلط انداز میں پیش کرنے کی شکایت کی تھی۔ سماجوادی پارٹی سربراہ ملائم سنگھ یادو کے خلاف ٹیلی فون پر دھمکیاں دینے کا الزام عائد کرنے کے بعد ریاستی حکومت نے ٹھاکر کو ماہ جولائی میں معطل کردیا تھا تاہم آئی جی رتبہ کے عہدیدار امیتابھ ٹھاکر نے بتایا کہ ویجلنس ٹیم نے آج تلاشی کے دوران تیار کردہ فہرست میں ان کے والدین، بھائی اور بیوی کی املاک کو بھی شامل کرلیا ہے بلکہ اس خصوص میں ان کے رشتہ داروں کو وضاحت پیش کرنے کا موقع بھی نہیں دیا گیا۔ تاہم ویجلنس ٹیم ٹھاکر کی قیامگاہ کے باہر منتظر میڈیا کو حقیقت بتائے بغیر روانہ ہوگئی۔

TOPPOPULARRECENT