Monday , December 18 2017
Home / ہندوستان / لکھنؤ۔آگرہ ایکسپریس وے پرفائٹر طیاروں کی آج لینڈنگ

لکھنؤ۔آگرہ ایکسپریس وے پرفائٹر طیاروں کی آج لینڈنگ

اناؤ23اکتوبر(سیاست ڈاٹ کام )ہندوستانی فضائیہ کے فائٹر طیارے لکھنؤ-آگرہ ایکسپریس وے پر کل جب ہوائی قلابازیاں دکھائیں گے تو یہ منظر دیکھنے والا ہوگا۔فضائیہ کے لڑاکو طیاروں کے اترنے اور پرواز کرنے کیلئے لکھنؤ-آگرہ ایکسپریس وے پر اناؤ کے بانگر مئوکے قریب تین کلو میٹر ہوائی ٹریک تیار کیا گیاہے ۔فائٹر طیارے لکھنؤ-آگرہ ایکسپریس وے کی ایئر اسٹرپ پر لینڈنگ اور ٹیک آف کرکے فضائیہ کی طاقت کا احساس کرائیں گے ۔مال بردار طیارہ ہرکیولس C-130اور گروڑ فورس کے جوا ن بھی ٹریک پر اتریں گے ۔سرکاری ذرائع نے آج یہاں بتایا کہ فائٹر طیاروں میں روڑ، جیگوار، میراج، ہرکیولس گلوب ماسٹر C-130اور سکھوئی ۔ 30 لینڈنگ کریں گے ۔ جیگوار، میراج اور سکھوئی جیسے فائٹر طیاروں کو ہندوستانی فضائیہ کی شان سمجھا جاتاہے ۔یہ فائٹر طیارے پلک جھپکتے ہی دشمنوں کو صفایا کرکے واپس آجاتے ہیں۔ان طیاروں سے انسانی امداد یا آفات راحت جیسے حالات میں فضائیہ کی تیاریوں کا ٹسٹ بھی ہوگا۔ملک کے تقریباً 12قومی شاہراہوں میں فضائیہ کے طیاروں کی لینڈنگ کیلئے منظوری دی گئی ہے لیکن ابھی تک صرف د وپر اس کا تجربہ کیا گیاہے ۔دفاعی ذرائع نے بتایا کہ اس پروگرام کیلئے فضائیہ کے طیاروں میں AN-32مال بردار طیارہ اور آئی ایف کے اہم لڑاکو جیٹ طیاروں کوبھی شامل کیا گیاہے ۔انہوں نے بتایا کہ یہ مشق آئی اے ایف کے گروڑ کمانڈو کے طیارےC-130کی لینڈنگ کے آغاز سے ہوگا،جہاں وہ دشمنوں کی سرحدوں کے پیچھے ایک نقلی حملہ کریں گے ۔گروڑ کی لینڈنگ کے بعد فائٹر طیاروں کی ایک سیریز ایکسپریس وے سے چھو کر جائے گی اوروہ ہوا میں قلابازیوں کا مظاہرہ کریں گے ۔اس کیلئے پہلے مرحلہ میں تین جیگوار ہوں گے ،اس کے بعد تینوں کے گروپ میں چھ میراج۔ 2000اور اس کے بعد چھ SU30-Mکے آئی ہوں گے۔ ذرائع نے بتایا کہ AN-32 مال بردار طیارہ بھی اس کا ایک حصہ ہوگا۔گروڑ کمانڈو کو نکالنے کیلئے C-130کی واپسی کے ساتھ یہ شو ختم ہوجائے گا۔2015کے مئی میں قومی شاہراہوں پر پہلی بار ایمرجنسی لینڈنگ کی گئی تھی ۔میراج -2000 لڑاکو طیارہ کو قومی راجدھانی دہلی کے قریب ایکسپریس وے پر اتا را گیاتھا۔نومبر 2016میں آگرہ -لکھنؤایکسپریس کے افتتاح کے بعد چھ لڑاکو طیارے سکھوئی۔ 30،اے کے وائی اور میراج ۔ 2000 کی نقلی لینڈنگ کرائی گئی تھی۔قابل غور ہے کہ پاکستان،چین اور سوئزر لینڈ جیسے ممالک جنگ کے دوران فضائیہ کی آپریٹنگ کو یقینی بنانے کیلئے ایئر فورس کو بڑے پیمانہ پر قومی شاہراہو ں پر لینڈنگ کی اجازت دیتے ہیں۔سنٹرل ایئر کمان ہیڈ کوارٹر کے سینئر ایئر اسٹاف ایئر مارشل اے ایس بلورا طیاروں کی لینڈنگ،ٹیک آف کرائیں گے ۔اس ایکسرسائز کے لئے گوالیار، گورکھپور، بریلی اور ہنڈن ایئر بیس سے 16طیارے یہاں پہنچیں گے۔ وی وی آئی مہمانوں کیلئے الگ سے پنڈال کا انتظام کیا گیاہے۔ فضائیہ کے کل کے ایکسر سائز کو دیکھتے ہوئے ضلع اناؤ کی سرحد میں ایکسپریس وے پر آمد رفت پوری طرح بند کردی گئی ہے ۔ آج صبح 10بجے سے اگلے 28گھنٹے تک کیلئے ایکسپریس وے کو بند کردیا گیاہے ۔لوگوں کی پریشانیوں کو دیکھتے ہوئے کئی مقامات پر روٹ ڈائیورٹ کیا گیاہے ۔لکھنؤ سے چلنے والی گاڑیوں کو قنوج کیلئے ڈائیورٹ کردیا گیاہے۔ ہردوئی سے ایکسپریس وے پر جانے والے کٹ کو پوری طرح بند کردیا گیاہے۔ایکسپریس وے کی ایئر ٹریک کی سیکورٹی اور انتظامات فوج کی ہاتھوں میں ہوں گے ۔

TOPPOPULARRECENT