Monday , December 11 2017
Home / ہندوستان / لکھنؤ کی عیدگاہ میں پہلی مرتبہ خواتین کا داخلہ

لکھنؤ کی عیدگاہ میں پہلی مرتبہ خواتین کا داخلہ

نماز عید کیلئے خصوصی انتظامات ۔ مولانا خالد رشید کا بیان
لکھنؤ 6 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) مذہبی مقامات میں خواتین کے داخلہ پر جاریہ مباحث کے دوران شہر لکھنؤ کی مشہور عیدگاہ میں پہلی مرتبہ خواتین کے لئے خصوصی انتظامات کئے گئے ہیں تاکہ وہ کل عیدالفطر کے موقع پر نماز ادا کرسکیں۔ عیش باغ عیدگاہ کے امام مولانا خالد رشید فرنگی محلی نے یہ اطلاع دی اور بتایا کہ پہلی مرتبہ عیدگاہ میں خواتین کو نماز عید کی ادائیگی کے لئے علیحدہ انتظامات کئے گئے ہیں۔ انھوں نے کہاکہ عیدگاہ پر مرد حضرات کے ساتھ خواتین کی کثیر تعداد علیحدہ شامیانوں میں نماز عید ادا کرے گی۔ مولانا نے کہاکہ قبل ازیں خواتین کے لئے عیدگاہ کے دروازے بند نہیں کئے گئے تھے لیکن خواتین کے لئے خصوصی انتظامات نہیں کئے جاتے تھے لیکن اس مرتبہ علیحدہ انتظامات کے باعث خواتین کی کثیر تعداد نماز عید ادا کرے گی۔ یہ فیصلہ ایسے وقت کیا گیا ہے جبکہ ملک بھر میں یہ مباحث جاری ہیں کہ مذہبی مقامات پر خواتین کو داخلہ دیا جائے یا نہیں؟ مہاراشٹرا میں ایک صدی قبل شنی شنگھانا پور مندر میں خواتین کے داخلے پر عائد پابندی کو جاریہ سال اپریل میں اٹھادی گئی ہے گوکہ درگاہوں میں خواتین کے داخلہ پر کوئی تحدیدات نہیں ہیں لیکن مساجد اور عیدگاہوں میں عبادت کی اجازت نہیں ہے۔ مولانا خالد رشید نے بتایا کہ عیدگاہ عیش باغ کا فیصلہ ترقی پسند اقدام سے تعبیر کیا جاسکتا ہے۔ واضح رہے کہ بھارتیہ مسلم مہیلا آندولن نے حال ہی میں بمبئی ہائی کورٹ میں ایک عرضی داخل کرتے ہوئے درگاہ حاجی بل پر حاضری سے خواتین کو باز رکھنے کے اقدام کو چیلنج کیا ہے؟

TOPPOPULARRECENT