Thursday , June 21 2018
Home / ہندوستان / لکھنو میں اوقافی جائیدادوں کے معاملے پر 23 اگست کو مہا ریالی

لکھنو میں اوقافی جائیدادوں کے معاملے پر 23 اگست کو مہا ریالی

لکھنو12 اگست (سیاست ڈاٹ کام)مجلس علماء ہند اور لکھنو کی تمام شیعہ تنظیموں کی جانب سے 23 اگست کو مولانا کلب جواد نقوی نے لکھنو میں شیعہ مہا ریالی طلب کی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ لکھنو میں ریالی کی جگہ ابھی طئے نہیں ہے اس میں لکھنو کے علاوہ نئی دہلی کے علماء شیعہ اور سنی علماء کو مدعو کیا جائے گا، ریالی میں شیعہ اوقاف کی جائیدادوں کو بربادی سے

لکھنو12 اگست (سیاست ڈاٹ کام)مجلس علماء ہند اور لکھنو کی تمام شیعہ تنظیموں کی جانب سے 23 اگست کو مولانا کلب جواد نقوی نے لکھنو میں شیعہ مہا ریالی طلب کی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ لکھنو میں ریالی کی جگہ ابھی طئے نہیں ہے اس میں لکھنو کے علاوہ نئی دہلی کے علماء شیعہ اور سنی علماء کو مدعو کیا جائے گا، ریالی میں شیعہ اوقاف کی جائیدادوں کو بربادی سے بچانے وزیر اعلی اکھیلیش یادو کی وزارتی کونسل کے وزیر اوقاف محمد اعظم خان کو وزارتی کونسل سے ہٹانے یا ان سے اوقاف کا محکمہ واپس لینے کا مطالبہ کیا جائے گا نیز پورے معاملے میں سماجوادی پارٹی سربراہ ملائم سنگھ یادو سے شیعہ قوم حق و انصاف مانگے گی۔

دوسری طرف ریاستی وزیر اعظم خاں نے ایک عہد یہ کیا کہ اوقاف کی جن جائیدادوں کو علماء نے فروخت کیا ہے بے ایمانی گھپلے کئے ہیں اپنے آدمیوں کو شیعہ وقف بورڈ پر بٹھا کر اوقاف کی کروڑوں روپئے کی جو اراضی کو نقصان پہونچایا ہے ان سے ریاستی حکومت ان سے انصاف لے گی سی بی آئی سے لیکر اکنامکس ونگ تک سے جانچ کرائی جائے گی۔ دوسری طرف لکھنو کے عوام اب مولانا کلب جواد اور محمد اعظم خان کے روز روز کے بیانوں سے تنگ آگئے ہیں عوام کی اکثریت مولانا کلب جواد پر دباو ڈال رہی ہے کہ وہ بہ حیثیت عالم دین کی اپنی ذمہ داری کو سمجھتے ہوئے فوری طور پر اس معاملے کو ختم کرنے صلح کی پیش کش کر کے قانونی لڑائی لڑ کر اپنی پوزیشن کو صاف کریں تو زیادہ بہتر ہے۔

TOPPOPULARRECENT