Thursday , July 19 2018
Home / دنیا / لیبیا سے فنڈس کی وصولی، سرکوزی گرفتار

لیبیا سے فنڈس کی وصولی، سرکوزی گرفتار

پیرس 20 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) فرانس کے سابق صدر نکولاس سرکوزی کو 2007 ء کے صدارتی انتخابات میں لیبیا سے فنڈس کے مشتبہ حصول کے بارے میں پوچھ گچھ کے لئے آج پولیس تحویل میں لے لیا گیا۔ 63 سالہ سرکوزی اس کیس میں پوچھ گچھ کے لئے جاری کردہ سمنس کا جواب دینے سے تاحال انکار کررہے تھے۔ اس کیس کی تحقیقات میں گزشتہ سال نومبر میں اُس وقت شدت پیدا کردی گئی جب ایک بزنسمین نے فرانسیسی قائد کے پہلے صدارتی انتخابی مقابلہ میں حصہ لیتے وقت لیبیائی رہنما کی طرف سے اُنھیں بھیجے گئے نقدی سے بھرے تین سوٹ کیس پہونچایا تھا۔ سرکوزی کو تحویل میں لئے جانے کی خبر سب سے پہلے میڈیا پارٹ تحقیقاتی نیوز ویب سائٹ اور فرانسیسی روزنامہ لاء مونڈے نے دی جس سے چند ہفتے قبل ان کے ایک سابق ساتھی الیکزینڈر دیوہری کو لندن میں گرفتاری کے بعد ضمانت پر رہا کیا گیا تھا۔ دیوہری ماقبل سماعت تحویل کے لئے فروری میں وطن واپس ہوگئے تھے جب ان کی گرفتاری کے لئے دوسرا سمن جاری کیا گیا تھا۔ سرکوزی نے لیبیا کے سابق ڈکٹیٹر معمر قذافی مرحوم اور ان کے بیٹے سیف الاسلام قذافی کی طرف سے اُنھیں انتخابی مقابلے کے لئے فنڈس دیئے جانے کے دعوؤں کی تردید کی تھی اور یہ کہتے ہوئے اس دعوے کو مسترد کردیا تھا کہ قذافی کی 41 سالہ حکمرانی ختم کرنے کے لئے امریکہ کے زیرقیادت کی گئی فوجی کارروائی میں فرانس کی شمولیت پر برہمی کے نتیجہ میں ان پر یہ الزام عائد کیا گیا تھا۔ تاہم لبنانی نژاد فرانسیسی تاجر زید تقی الدین نے کہا تھا کہ اُنھوں نے اواخر 2006 ء اور اوائل 2007 ء کے دوران تریپولی تا پیرس تین مرتبہ سفر کرتے ہوئے سرکوزی کی صدارتی انتخابی مہم کے لئے نقد رقم لایا تھا۔ اُنھوں نے کہاکہ ہر چکر میں اُنھوں نے نقدی کا ایک سوٹ کیس لایا تھا جس میں 100 اور 500 یورو کی کرنسی نوٹوں پر مشتمل 1.5 تا 2.00 ملین یورو رکھے گئے تھے۔ زید تقی الدین نے فرانسیسی میڈیا کو دیئے گئے انٹرویو میں یہ سنسنی خیز انکشاف کیا تھا کہ قذافی کے فوجی انٹلی جنس سربراہ عبداللہ السنوسی نے اُنھیں یہ رقم دی تھی۔

TOPPOPULARRECENT