Tuesday , January 16 2018
Home / Top Stories / مائتری ایکسپریس پر پٹرول بم پھینکے گئے، مسافرین محفوظ

مائتری ایکسپریس پر پٹرول بم پھینکے گئے، مسافرین محفوظ

ڈھاکہ ۔ /8 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) ہند ۔ بنگلہ ’’مائتری ایکسپریس ‘‘ کے مسافرین آج اس وقت بال بال بچ گئے جب اپوزیشن کارکنوں نے کولکتہ سے آرہی اس ٹرین پر پٹرول بم پھینکے۔بنگلہ دیش میں اپوزیشن بی این پی کے ملک گیر احتجاج اور ناکہ بندی نے تشدد کی شکل اختیار کرلی ہے ۔ راستوں میں رکاوٹیں کھڑی کرنے والوں میں آج دوپہر مغربی اسوردی ریلوے اسٹی

ڈھاکہ ۔ /8 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) ہند ۔ بنگلہ ’’مائتری ایکسپریس ‘‘ کے مسافرین آج اس وقت بال بال بچ گئے جب اپوزیشن کارکنوں نے کولکتہ سے آرہی اس ٹرین پر پٹرول بم پھینکے۔بنگلہ دیش میں اپوزیشن بی این پی کے ملک گیر احتجاج اور ناکہ بندی نے تشدد کی شکل اختیار کرلی ہے ۔ راستوں میں رکاوٹیں کھڑی کرنے والوں میں آج دوپہر مغربی اسوردی ریلوے اسٹیشن کے قریب اس ٹرین پر کئی پٹرول بم پھینکے ۔ یہ ٹرین ڈھاکہ واپس ہورہی تھی ۔ ریلوے ترجمان نے بتایا کہ عملہ میں کوئی بھی مسافر زخمی نہیں ہوا تاہم ٹرین کے انجن کو معمولی نقصان پہونچا کیونکہ بم اس کے پہیوں کے نیچے پھٹے ۔ بنگلہ دیش میں جاری سیاسی تشدد کے دوران یہ تازہ حملہ ہے جبکہ 75 افراد تشدد کی اس لہر میں ہلاک ہوچکے ہیں ۔ اپوزیشن کارکنوں نے کل ایک پرہجوم بس اور ٹرک پر پٹرول بم پھینکے تھے جس میں 9 افراد بشمول 3 بچے جھلس کر ہلاک ہوگئے تھے ۔ ریلوے عہدیداروں نے کہا کہ سابق وزیراعظم خالدہ ضیاء کی بی این پی نے /6 فبروری سے تمام شاہراہوں ، ریلویز اور آبی گزرگاہوں کی ٹرانسپورٹ ناکہ بندی کا اعلان کیا ۔اس کے بعد سے اب تک یہ ٹرین پر 8 واں حملہ ہے ۔ اس حملے کے بعد مائتری ایکسپریس کا انجن تبدیل کردیا گیا اور ٹرین ڈھاکہ پہونچ گئی ۔

بنگلہ دیش میں بے چینی سے ترقی متاثر
وسطی کومیلا اور مغربی جیسور میں آر اے بی کے ہاتھوں جماعت اسلامی کارکن ہلاک
ڈھاکہ۔8فبروری ( سیاست ڈاٹ کام) بنگلہ دیش کی جاریہ مالی سال شرح ترقی7.2فیصد ناممکن نظر آتی ہے کیونکہ ملک گیر سطح پر مہلک سیاسی بے چینی پھیلی ہوئی ہے ۔بنگلہ دیش کے وزیر فینانس عبدالمعال عبدالمحیط نے آج کہا کہ ڈسمبر میں بھی انہیں پوری امید تھی کہ شرح ترقی جی ڈی پی کا 7.2 فیصد برقرار رہے گی لیکن اب انہیں حذف کی تکمیل کے بارے میں سنگین شبہات پیدا ہوگئے ہیں ۔ وہ مالی تجزیہ کے موضوع پر ایک پریس کانفرنس سے خطاب کررہے تھے ۔ انہوں نے خوف ظاہر کیا کہ کئی چھوٹے تاجر سیاسی بے چینی کی وجہ سے مالی منظر سے غائب ہوجائیں گے ۔ گذشتہ ایک ماہ سے زیادہ جاری سیاسی بے چینی کا حوالہ دیتے ہوئے عبدالمحیط نے کہا کہ حالانکہ ملک گیر سطح پر بی این پی نے 6جنوری سے ٹرانسپورٹ ناکہ بندی شروع کردی ہے

لیکن دارالحکومت میں اس کا کوئی نمایاں کوئی اثر نہیں ہے لیکن اس کی وجہ سے اضلاع میں مالی سرگرمیاں بری طرح متاثر ہوئی ہیں ۔ یہ سیاسی ۔ انتظامی کنٹرولس کے مرکز سے کافی دور ہوچکی ہے ۔ وزیر فینانس کا تبصرہ حکومت کا اولین رسمی بیان برائے معیشت ہے جو سیاسی بے چینی کے آغاز کے بعد منظر عام پر آیا ہے ۔ اخبارات نے تشدد میں تازہ ہلاکتوں کی اطلاعات شائع کی ہیں ۔ مبینہ طور پر ایک لاری ڈرائیور زخموں سے جانبر نہیں ہوسکا اور دو مشتبہ سبوتاج میں مصروف افراد کو انکاؤنٹرس میں اعلیٰ سطحی ریاپڈ ایکشن بٹالین نے وسطی کومیلا اور مغربی جیسور میں آج گولی مار کر ہلاک کردیا ۔ عہدیداروں کے بموجب یہ دونوں فائرنگ کے تبادلہ میں ہلاک ہوئے اور بی این پی کی حلیف جماعت اسلامی کے کارکن تھے ۔ ایک روزنامہ کے بموجب 100سے زیادہ افراد پٹرول بم حملوں میں ہلاک کردیئے گئے۔

TOPPOPULARRECENT