Wednesday , December 13 2017
Home / ہندوستان / ماحولیاتی آلودگی کا منفی اثر چیلنج، شمسی توانائی کی وکالت

ماحولیاتی آلودگی کا منفی اثر چیلنج، شمسی توانائی کی وکالت

نئی دہلی۔21 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) ماحولیاتی آلودگی کے منفی اثر کو ایک چیلنج قرار دیتے ہوئے وزیراعظم نریندر مودی نے آج کہا کہ شمسی توانائی سے استفادہ یقینی بنانے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ ماحولیات کے بارے میں طویل عرصہ سے تبادلہ خیال ہورہا ہے لیکن گزشتہ چند سال سے اس کے منفی اثرات عام زندگی پر محسوس کئے جارہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس مسئلہ کا حل تلاش کرنا انسانیت کے لئے ایک چیلنج بن چکا ہے۔ نریندر مودی نے آج الیکٹرک بس کو جھنڈی دکھاکر روانہ کیا جسے وزارت روڈ ٹرانسپورٹ اینڈ ہائی ویز نے لوک سبھا اسپیکر سمترا مہاجن کو بطور تحفہ پیش کی۔ اس بس سے ارکان پارلیمنٹ استفادہ کریں گے۔ پیرس میں حالیہ ماحولیاتی چوٹی اجلاس کا حوالہ دیتے ہوئے نریندر مودی نے کہا کہ امریکہ، فرانس اور ہندوستان نے مشترکہ طور پر اختراعی مشن شروع کیا ہے۔ اس میں بل اور ملندا گیٹس فائونڈیشن کی بھی مدد شامل رہے گی جس کے ذریعہ گرین ٹکنالوجی کو فروغ دیا جائے گا اور بین الاقوامی سطح پر شمسی اتحاد قائم کیا جائے گا۔ اس اتحاد کا ہیڈ کوارٹر دہلی میں رہے گا۔ وزیراعظم نے کہا کہ دنیا میں 122 ایسے ممالک ہیں جہاں سال میں 300 دن سے زائد سورج کی روشنی فراہم ہوتی ہے لہٰذا ہندوستان نے اس معاملہ میں پہل کی ہے کہ ایک ایسی تنظیم قائم کی جائے جہاں ان تمام ممالک متحد ہوکر شمسی توانائی سے استفادہ کو یقینی بنائیں۔

TOPPOPULARRECENT