Monday , June 25 2018
Home / شہر کی خبریں / ماسائی پیٹ ریل ۔ بس تصادم ‘ مردہ قرار دیا گیا لڑکا دواخانہ میں زندہ

ماسائی پیٹ ریل ۔ بس تصادم ‘ مردہ قرار دیا گیا لڑکا دواخانہ میں زندہ

غلط شناخت کے باعث الجھن ۔ دتو نامی لڑکے کو چھ سالہ درشن گوڑ سمجھ کر آخری رسومات اداکردی گئی تھیں ‘ ہریش راؤ

غلط شناخت کے باعث الجھن ۔ دتو نامی لڑکے کو چھ سالہ درشن گوڑ سمجھ کر آخری رسومات اداکردی گئی تھیں ‘ ہریش راؤ
حیدرآباد 25 جولائی ( سیاست ڈاٹ کام ) میدک کے ماسائی پیٹ میں کل پیش آئے حادثہ میں ایک چھ سالہ لڑکے درشن گوڑ کو شائد دوسری زندگی ملی ہے ۔ اس لڑکے کے تعلق سے سمجھا گیا تھا کہ وہ کل پیش آئے ہلاکت خیز حادثہ میں جاں گنوا بیٹھا ہے ۔ غلط شناخت کے اس معاملہ میں لڑکے کے والد سوامی گوڑ کو اس کے فرزند کی نعش سونپ دی گئی تھی اور غم زدہ والدین نے اس کی آخری رسومات بھی ادا کردی تھیں۔ آج درشن ایک دواخانہ میں علاج کے دوران ہوش میں آگیا جہاں اسے حادثہ کے بعد پہونچایا گیا تھا ۔ اس نے اپنے والد کا نام بتایا اور اس کے غمزدہ والدین کو اس کی اطلاع دی گئی اور بتایا گیا کہ ان کے لڑکے کا دواخانہ میں علاج چل رہا ہے ۔ دواخانہ پہونچنے پر سوامی گوڑ کے لڑکے نے اپنے والد کا استقبال کیا اور حسن اتفاق کہ اس لڑکے کی آج ہی سالگرہ بھی ہے ۔ تلنگانہ کے وزیر آبپاشی مسٹر ٹی ہریش راؤ نے یہ بات بتائی اور واضح کیا کہ نعش کی حوالگی کے معاملہ میں کچھ الجھن ہوگئی تھی ۔ اس الجھن کے تحت سوامی گوڑ نامی ایک شخص کسی اور لڑکے کی نعش لے گیا تھا اور یہ سمجھ رہا تھا کہ یہ اس کا لڑکا ہے ۔ سوامی گوڑ نے جو درشن گوڑ کا والد ہے وہ اپنے لڑکے کی نعش کی بجائے دوسرے لڑک کی نعش لے گیا تھا ۔ اس غلطی کا اب ازالہ کردیا گیا ہے اور سوامی گوڑ کل صدمہ کی حالت میں کاغذات پر دستخط کرنے کے بعد نعش لے گیا تھا اور وہ نعش دتو نامی ایک لڑکے کی تھی جو در اصل حادثہ میں ہلاک ہوا تھا ۔ دتو اور اس کی بڑی بہن بھی اس حادثہ میں ہلاک ہوگئے اور ان کے والد ویرا بابو نے اپنی دختر کی نعش حاصل کرلی تھی اور وہ سمجھ رہا تھا کہ اس کا لڑکا زندہ ہے اور دواخانہ میں علاج چل رہا ہے ۔ بعد ازاں رات کے وقت ویا بابو دواخانہ کو آیا اور اس کی جانچ پڑتال کی ۔ اس کو پتہ چلا کہ اس کا لڑکا زندہ نہیں ہے اور اس کی نعش بھی وہاں نہیں ہے ۔ دونوں ہی والدین سے کہا گیا تھا کہ وہ ضلع انتظامیہ سے رابطہ کریںاور ریکارڈ درست کروائیں۔ آج درشن کا یوم پیدائش ہے اور اس کیلئے ایک طرح سے یہ دوسری زندگی ہے ۔ سوامی گوڑ نے کہا کہ ان کے لڑکے کا نام درشن گوڑ ہے اور ہم اسے پیار سے دھنش پکارتے ہیں۔ انہوں نے کل اسے اسکول بھیجا تھا اور بعد میں انہیں اس حادثہ کی فون پر اطلاع ملی ۔ ان سے کہا گیا تھا کہ ان کا لڑکا فوت ہوگیا ہے جس کے بعد وہ کئی دواخانے گئے ۔ ایک خانگی دواخانہ میں انہیں کئی بچوں کی نعشیں دکھائی گئیں۔ وہاں وہ بیہوش ہوگئے تھے اور نعش کی شناخت نہیں کی تھی ۔ جو نعش انہیں دکھائی گئی تھی اس کا چہرہ مسخ ہوگیا تھا ۔ انہوں نے وہ نعش حاصل کرکے آخری رسوم ادا کیں۔ وہ دھنش اور دتو کے مابین شناخت نہیں کرسکا اور الجھن کا شکار ہوگیا تھا ۔ اسے جو کچھ ہوا ہے اس پر افسوس ہے ۔ تاہم دتو کے والدین انتہائی صدمہ کا شکار ہیں اور وہ غمزدہ ہیں۔ دتو کا تعلق اسلام پور گاوں سے ہے جبکہ درشن کا تعلق کشٹا پور گاؤں سے ہے ۔ اس دوران آج دتو کی نعش کو آج کشٹاپور گاؤں کے قبرستان سے ضلع انتظامیہ عہدیداروں اور پولیس کی موجودگی میں نکال گیا ۔ نعش کو اس کے والد ویرا بابو کے حوالے کردیا گیا ۔ میدک کے ایس پی شیموشی باجپائی نے یہ بات بتائی ۔ اس دوران ریلوے حکام سرگرم ہوگئے ہیں اور انہوں نے ماسائی پیٹ اور وڈیارم ریلوے اسٹیشنوں کے درمیان بے پہرہ ریلوے کراسنگ پر گیٹ نصب کرنے کا کام شروع کردیا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT