Saturday , December 15 2018

مالک مساج سنٹر سے جبری وصولی ، 3 کانسٹبلس اور ساتھی گرفتار

بنجارہ ہلز روڈ نمبر 10 کے لکژری فیملی سیلون اینڈ اسپا پر دھاوا ۔ ڈی سی پی اویناش موہنتی کا بیان
حیدرآباد ۔ /20 فبروری (سیاست نیوز) سنٹرل کرائم اسٹیشن (سی سی ایس ) پولیس کی اسپیشل ٹیم نے تین پولیس کانسٹبلس اور ان کے ایک ساتھی کو مساج سنٹر کے مالک سے جبراً وصولی کے الزام میں گرفتار کرلیا ۔ ڈپٹی کمشنر پولیس ڈیٹکٹیو ڈپارٹمنٹ مسٹر اویناش موہنتی نے بتایا کہ /8 فبروری کو شہر کے مختلف پولیس اسٹیشن سے وابستہ پولیس کانسٹبلس خطیب احمد (بیگم پیٹ پولیس اسٹیشن ، بی وینو گوپال (چھتری ناکہ) پولیس اسٹیشن ، پی وجئے بابو (لنگر حوض ) پولیس اسٹیشن اور اس کے ساتھی بی ششی کمار نے بنجارہ ہلز روڈ نمبر 10 پر واقع ’’لکژری فیملی سیلون اینڈ اسپا‘‘ پر دھاوا کرتے ہوئے خود کو کمشنر ٹاسک فورس سے وابستہ ہونے کا دعویٰ کیا اور مساج سنٹر کے مالک آر راجو ، ایک منیجر اور 3 بیوٹیشنس کو ایک کمرے میں محروس کرتے ہوئے انہیں دھمکایا کہ ان کا تعلق ٹاسک فورس سے ہے اور وہاں پر غیرقانونی سرگرمیاں ہورہی ہیں ۔ مقدمہ درج نہ کرنے کیلئے نقد رقم کا مطالبہ کیا اور انہیں ایک کمرے میں محروس کردیا ۔ اتنا ہی نہیں مذکورہ کانسٹبلس اور ان کے ساتھی نے مساج سنٹر کے مالک سے ایک لاکھ 35 ہزار روپئے نقد رقم جبراً طور پر وصول کرلی اور بعد ازاں وہاں سے فرار ہونے کے دوران سی سی ٹی وی کیمروں کے ڈی وی آر (ریکارڈنگ باکس) بھی لے گئے ۔ مساج سنٹر کے مالک راجیو نے سی سی ایس پولیس سے شکایت درج کروائی تھی جس پر ڈی سی پی مسٹر موہنتی نے اسپیشل ٹیم ۔ I کے اسسٹنٹ کمشنر آف پولیس مسٹر کے نرسنگ راؤ کو تحقیقات کی ذمہ داری دی تھی جس پر کارروائی کرتے ہوئے اسپیشل ٹیم نے تینوں کانسٹبلس اور اس کے ساتھی کو گرفتار کرلیا اور ان کے قبضے سے 95 ہزار نقد رقم اور سی سی ٹی وی کا ڈی وی آر باکس بھی برآمد کرلیا ۔ گرفتار ملزمین کو عدالت میں پیش کرتے ہوئے جیل بھیج دیا ۔

TOPPOPULARRECENT