Monday , November 20 2017
Home / دنیا / مالی میں مشتبہ جہادیوں کے ہاتھوں پیش امام کا قتل

مالی میں مشتبہ جہادیوں کے ہاتھوں پیش امام کا قتل

سوارے (مالی ) ۔ 15 اگسٹ ۔(سیاست ڈاٹ کام) جہادیوں نے وسطی مالی میں ایک دیہات کے پیش امام کو قتل کردیا جس نے اُن کی بار بار اُسے اپنی تنظیم میں شامل کرنے کی کوششوں پر انکار کردیا تھا ۔ مقامی عہدیدار کے بموجب بندوق برداروں نے جن کا تعلق شبہ ہے کہ بنیاد پرست اسلامی مبلغ امادو کوفا سے ہے امام بارکیرودیہات الدجی سیکو کو جمعرات کی شب قتل کردیا ۔ عہدیدار نے کہا کہ دو افراد موٹر سیکل پر سوار آئے تھے اور انھوں نے دیہات میں داخل ہونے سے پہلے پیدل پیش امام کی قیامگاہ پر جاکر اُن پر گولیاں چلادی ۔ ایسا معلوم ہوتا ہے کہ حملہ آور اس علاقہ سے بخوبی واقف تھے ۔ حالیہ مہینوں میں جہادیوں نے پیش امام بارکیرو کو اپنی تائید پر آمادہ کرنے کی ناکام کوشش کی تھی ۔ 63 سالہ امام کے بھتیجے عمر سیکو نے بھی اُن کے قتل کی توثیق کی اور کہا کہ اُنھیں اس لئے قتل کیا گیا کیونکہ وہ جہادیوں کے مخالف تھے ۔ صیانتی ذرائع کے بموجب کوفا کا تعلق ماسینا لبریشن فرنٹ سے تھا ۔ یہ ایک نیا گروپ ہے جو جاریہ سال کے اوائل میں اُبھر آیا ہے اور اس نے کئی حملوں کی ذمہ داری قبول کی ہے جن میں سے بعض وسطی مالی میں فوج کو نشانہ بناکر کئے گئے تھے ۔ کوفا بھی انصار دینے (امام کا دفاع کرنے والی ) سے تعلق رکھتے تھے ۔ مالی میں اپریل 2012 ء سے شمالی بنجر علاقہ کے بیشتر حصہ پر اس گروپ نے قبضہ کرلیا ہے ۔ امریکہ نے کہاکہ انصار دینے 2013ء میں امریکہ کی بلاک لسٹ میں شامل کیا گیا ہے کیونکہ اس کے القاعدہ سے قریبی روابط ہیں اور اس نے شمالی مالی میں اپنے کئی مخالفین کو اذیت رسانی کی ہے ۔ تینوں مشتبہ افراد گرفتار کرلئے گئے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT