Wednesday , January 17 2018
Home / کھیل کی خبریں / مانچسٹر سٹی کے کھلاڑیوں کا معاوضہ سب سے زیادہ

مانچسٹر سٹی کے کھلاڑیوں کا معاوضہ سب سے زیادہ

مانچسٹر سٹی ۔ 17 اپریل (سیاست ڈاٹ کام ) ایک نئی رپورٹ کے مطابق انگلش کلب مانچسٹر سٹی کے فٹ بال کھلاڑی کھیلوں کی دنیا میں سب سے زیادہ معاوضہ حاصل کرنے والے کھلاڑی ہیں۔اسپورٹنگ اِنٹیلی جنس نامی ادارے سے جاری ہونے والے ایک نئے سروے کے مطابق مانچسٹر سٹی کے کھلاڑیوں کو اوسطاً سالانہ 53 لاکھ پاؤنڈ دیے جاتے ہیں، جو تقریباً ایک لاکھ پاؤنڈ

مانچسٹر سٹی ۔ 17 اپریل (سیاست ڈاٹ کام ) ایک نئی رپورٹ کے مطابق انگلش کلب مانچسٹر سٹی کے فٹ بال کھلاڑی کھیلوں کی دنیا میں سب سے زیادہ معاوضہ حاصل کرنے والے کھلاڑی ہیں۔اسپورٹنگ اِنٹیلی جنس نامی ادارے سے جاری ہونے والے ایک نئے سروے کے مطابق مانچسٹر سٹی کے کھلاڑیوں کو اوسطاً سالانہ 53 لاکھ پاؤنڈ دیے جاتے ہیں، جو تقریباً ایک لاکھ پاؤنڈ فی ہفتہ حاصل ہوتے ہیں۔انگلش پریمئیر لیگ کلب سٹی کو 2008 میں ابوظہی گروپ نے خریدا تھا۔ یہ اپنی ٹیم کے کھلاڑیوں کو امریکہ کی سب سے بڑی بیس بال لیگ ٹیموں نیویارک یینکیز اور ایل اے ڈوجرز سے بھی زیادہ معاوضہ ادا کرتی ہے۔معاوضوں کی فہرست میں نیویارک یینکیز اور ایل اے ڈوجرز دوسرے اور تیسرے نمبر پہ ہیں۔ ادارے کے مطابق سب سے زیادہ معاوضہ حاصل کرنے والی فہرست میں پہلے دس مقامات میں چھ فٹ بال، دو باسکٹ بال اور دو بیس بال کلب ہیں۔

اسپینش فٹ بال کلب ریال میڈرڈ اور اسپین ہی کا بارسلونا کلب پانچویں اور چھٹے نمبر پہ ہیں۔ دونوں لالیگا ٹیموں کے کھلاڑی سالانہ اوسطاً 49 لاکھ پاؤنڈ وصول کرتے ہیں۔آٹھویں نمبر پہ انگلش پریمئیر لیگ چیمپینز مانچسٹر یونائٹڈ براجمان ہے۔ پریمئیر لیگ پوانٹس ٹیبل پر اس وقت ساتویں نمبر پر آنے والی یونائٹڈ اپنے نئے مینیجر کی وجہ سے بحران کا شکار ہے۔ سپورٹنگ اِنٹیلی جنس کے مطابق یونائٹڈ اپنے کھلاڑیوں کو سالانہ اوسطً 43 لاکھ پاؤنڈ ادا کرتی ہے۔اسپورٹنگ اِنٹیلی جنس کی ویب سائٹ کے مطابق اس سروے میں صرف تنخواہ شامل کی گئی ہے، اور اس میں دیگر ذرائع سے ہونے والی آمدنی شامل نہیں ہے۔یہ سروے 294 ٹیموں پر مشتمل تھا اور اس میں 12 ملکوں سے 15 الگ لیگز اور سات بین الاقوامی کھیلوں کو شمار کیا گیا۔واضح رہے کہ یورپین فٹ بال کی تنطیم یوئیفا اس وقت مانچسٹر سٹی کے مالی معاملات کی تحقیقات کر رہی ہے۔ فائنینشل فیئر پلے قوانین کے تحت کی جانے والی ان تحقیقات میں 76 یورپین کلب شامل ہیں۔

TOPPOPULARRECENT