Wednesday , January 17 2018
Home / Top Stories / ’’مانگتا ہوں مت کہئے، ہندوستان آزاد ملک ہے‘‘

’’مانگتا ہوں مت کہئے، ہندوستان آزاد ملک ہے‘‘

نوآبادیاتی اصطلاحات کی ضرورت نہیں، راجیہ سبھا ارکان کو وینکیا نائیڈو کا مشورہ
نئی دہلی 15 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) نائب صدرجمہوریہ ایم وینکیا نائیڈو نے بحیثیت صدرنشین راجیہ سبھا آج پہلے دن ایوان کی کارروائی چلاتے ہوئے ضابطہ میں معمولی تبدیلی کی۔ اُنھوں نے وزراء اور ارکان سے کہاکہ وہ میز پر سوال جواب اور دیگر کاغذات پیش کرتے وقت نوآبادیاتی دور کی اصطلاحات استعمال نہ کریں۔ پارلیمنٹ کے سرمائی سیشن کے افتتاحی دن ایوان بالا کی کارروائی کی صدارت کرتے ہوئے نائیڈو نے کہاکہ میز پر کاغذات پیش کرتے وقت کسی کو بھی ’’میں مانگتا ہوں‘‘ کا لفظ استعمال نہیں کرنا چاہئے۔ اُنھوں نے کہاکہ ’’صرف یہ کہے کہ میں مزید پر کاغذات پیش کرنے اُٹھا ہوں‘‘۔ اس میں کچھ مانگنے کی ضرورت نہیں ہے، یہ آزاد ہندوستان ہے‘‘۔ اُنھوں نے ان تاثرات کا اظہار اُس وقت کیا جب وزراء نے ایوان کی میز پر کاغذات پیش کرتے ہوئے کہا تھا کہ ’’میں میز پر وہ کاغذات رکھنے کے لئے (اجازت) مانگتا ہوں جو آج کی مصروفیات کی نظرثانی شدہ فہرست میں میرے نام کے مقابل درج کئے گئے ہیں‘‘۔ تاہم اُنھوں نے فوری طور پر یہ وضاحت بھی کردی کہ یہ ان کا کوئی حکم نہیں ہے بلکہ ایک تجویز ہے۔ وینکیا نائیڈو نے کرسی صدارت پر فائز ہونے کے پہلے دن کی گئی صرف یہی واحد تبدیلی نہیں کی بلکہ آنجہانی ارکان کو خراج عقیدت ادا کرنے کے لئے پیش کردہ تعزیتی قراردادا پڑھنے کے لئے وہ اپنی نشست سے اُٹھ کھڑے ہوگئے تھے۔ ان کے پیشرو حامد انصاری اور بھیرون سنگھ شیخاوت اپنی نشستوں پر بیٹھ کر ہی ایسی قراردادیں پڑھا کرتے تھے۔ وینکیا نائیڈو اگسٹ میں نائب صدرجمہوریہ منتخب ہوئے تھے اور بہ اعتبار عہدہ راجیہ سبھا کے صدارتی افسر بھی ہوتے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT