Friday , November 24 2017
Home / جرائم و حادثات / ماں کے ساتھ رہنے سے کمسن لڑکے کا انکار

ماں کے ساتھ رہنے سے کمسن لڑکے کا انکار

مطلقہ جوڑے کے مقدمہ کے دوران بمبئی ہائیکورٹ میں جذباتی مناظر

ممبئی 10 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) بمبئی ہائی کورٹ میں آج جذباتی مناظر دیکھے گئے جب ایک کمسن بچہ اُس وقت بے قابو ہوکر رونے لگا۔ یہ لڑکا اپنے باپ کے ساتھ رہنا چاہتا تھا اور ماں کے ساتھ جانے سے انکار کررہا تھا۔ اگرچہ ایک فیملی کورٹ نے اس لڑکے کو ماں کی تحویل میں دیا تھا۔ جسٹس آر وی مورے اور جسٹس شالینی پھانسالکر جوشی پر مشتمل ڈیویژن بنچ ایک 28 سالہ خاتون کی طرف سے دائر کردہ درخواست کی سماعت کررہی تھی۔ اس خاتون نے اپنے سابق شوہر کو چھ سالہ لڑکے کے ساتھ حاضر ہونے کی ہدایت کیلئے استدعا کی تھی۔ اس خاتون کے مطابق 2006 ء میں اس کی شادی ہوئی تھی اور اور 2010 ء میں لڑکا تولد ہوا تھا۔ ڈسمبر 2014 ء میں اس جوڑے کے درمیان طلاق ہوگئی تھی اور لڑکے کی تحویل ماں کو دی گئی تھی کیوں کہ وہ کمسن تھا۔ درخواست گذار خاتون کے وکیل راجہ ٹھاکرے نے کہاکہ ’’لڑکے کے باپ نے گزشتہ 8 اگسٹ کو اُس وقت اس لڑکے کو زبردستی اٹھا لے گیا تھا جب وہ اسکول سے واپس ہورہا تھا۔ وہ لڑکے کے ساتھ شہر سے فرار ہوگیا تھا۔ بعدازاں ماں نے لڑکے کے باپ کے خلاف پولیس میں اغواء کی شکایت درج کروائی تھی‘‘۔ دوران تحقیقات پتہ چلا کہ 30 سالہ باپ اس لڑکے کو سورت میں واقع اپنے گھر لے جاچکا تھا اور پولیس اُس کا پتہ نہیں چلا سکی تھی۔ بالآخر ماں ہائی کورٹ سے رجوع ہوئی تھی جس کے نتیجہ میں یہ شخص اپنے بیٹے کے ساتھ آج عدالت میں حاضر ہوا تھا جہاں عدالت العالیہ نے احکام کے باوجود لڑکے کو لے جانے پر اس کی سرزنش کی۔ بنچ نے لڑکے کو ماں کے حوالہ کرنے کا حکم دیا اور جیسے ہی وہ کمرہ عدالت سے باہر نکلنے لگے کمسن بیٹا جذبات سے بے قابو ہوکر رونے لگا۔ وہ اپنی ماں کے ساتھ جانے کے لئے تیار نہیں تھا اور باپ کے ساتھ رہنا چاہتا تھا۔ اس دوران ججوں نے اس جوڑے کو بچہ کے ساتھ باہر نکل جانے کی ہدایت کی اور ماں اپنے روتے ہوئے بچہ کو ساتھ لے گئی۔

TOPPOPULARRECENT