Saturday , November 18 2017
Home / ہندوستان / ماہر جمالیات ڈاکٹر شکیل الرحمن کا انتقال

ماہر جمالیات ڈاکٹر شکیل الرحمن کا انتقال

نئی دہلی 10 مئی ( سیاست ڈاٹ کام) جمالیاتی فکر و نظر رکھنے والے اردو کے ممتاز ادیب و نقاد اور سابق مرکزی وزیرصحت ڈاکٹر شکیل الرحمان کا آج پچھلے پہر انتقال ہو گیا ۔مرحوم 85 برس کے تھے ۔ پسماندگان میں اہلیہ، دوبیٹیاں اور ایک بیٹا ہے ۔مرحوم کی طبیعت کافی دنوں سے ناساز چل رہی تھی ۔ پچھلے پہر فورٹس اسپتال (گڑگاوں) میں انہوں نے داعی اجل کو لبیک کہا۔ ڈاکٹر شکیل الرحمان کی موت کی خبر عام ہوتے ہی تمام وابستہ حلقوں میں رنج و غم کی لہر دوڑ گئی۔مرحوم ڈاکٹر شکیل نے کوئی 25 کتابیں تخلیق کرنے کے ساتھ ساتھ اسٹیج، ٹی وی اور ریڈیو کے لئے 50 سے زیادہ تمثیلی کاوشیں بھی انجام دیں۔ ڈاکٹر شکیل الرحمن نے حیدرآباد سے تعلق رکھنے والے برصغیر کے ممتاز مزاح نگار جناب مجتبیٰ حسین کے فن اور شخصیت پر بھی ایک کتاب بعنوان ’’مجتبیٰ حسین کا فن ۔ جمالیاتی مظاہر‘‘ لکھی تھی۔ درون ملک جہاں وہ ایک سے زیادہ قومی ایوارڈوں سے نوازے گئے وہیں پاکستان میں انہیں احمد ندیم قاسمی ایوارڈ سے سرفراز کیا گیا۔ مرحوم بہار،  میتھلا اور کشمیر کی یونیورسٹیوں کے سربراہ بھی رہے ۔پٹنہ سے ایم اے کرنے کے بعد ڈاکٹر شکیل اڈیشہ میں لکچرار ہوئے پھر سرینگر[جموں کشمیر] چلے گئے ۔ مرحوم نے 1961 میں پریم چند کی افسانہ نگاری پر تحقیقی مقالہ لکھا جس پر انہیں ڈی لٹ کی ڈگری سے سرفراز کیا گیا۔ ڈاکٹر شکیل الرحمن کی تدفین 11 مئی کی صبح گڑگاؤں میں عمل میں آئے گی۔

TOPPOPULARRECENT