Wednesday , June 20 2018
Home / پاکستان / ماہ رمضان میں سزائے موت کی تعمیل پر پاکستان میں امتناع

ماہ رمضان میں سزائے موت کی تعمیل پر پاکستان میں امتناع

اسلام آباد۔ 14جون ( سیاست ڈاٹ کام ) پاکستان نے ماہ رمضان کے دوران پھانسی دے کر سزائے موت کی تعمیل پر امتناع عائد کردیا ہے ۔ گذشتہ چھ ماہ کے دوران جب کہ پاکستان نے سزائے موت پر عائد امتناع برخواست کردیا تھا‘ تقریباً 150 مجرموں کو سزائے موت دی جاچکی ہے ۔ وزارت داخلہ نے کل ایک حکم نامہ جاری کرتے ہوئے تمام صوبائی حکومتوں کو ہدایت دی کہ ماہ ر

اسلام آباد۔ 14جون ( سیاست ڈاٹ کام ) پاکستان نے ماہ رمضان کے دوران پھانسی دے کر سزائے موت کی تعمیل پر امتناع عائد کردیا ہے ۔ گذشتہ چھ ماہ کے دوران جب کہ پاکستان نے سزائے موت پر عائد امتناع برخواست کردیا تھا‘ تقریباً 150 مجرموں کو سزائے موت دی جاچکی ہے ۔ وزارت داخلہ نے کل ایک حکم نامہ جاری کرتے ہوئے تمام صوبائی حکومتوں کو ہدایت دی کہ ماہ رمضان کے دوران سزائے موت کی تعمیل نہ کی جائے ۔ امکان ہے کہ رمضان کا آغاز جمعرات یا جمعہ کے دن ہوگا جس کا انحصار اگلے اسلامی قمری مہینے کا ہلال دیکھنے کے بعد آغاز ہوگا ۔ دنیا بھر کے مسلمان ماہ رمضان میں روزہ رکھتے ہیں ۔ غذا ‘ مشروبات ‘ سگریٹ نوشی اور جنسی تعلقات سے سحر تا افطار گریز کرتے ہیں ۔ پاکستان میں سزائے موت پر امتناع تقریباً چھ سال بعد گذشتہ ڈسمبر میں برخواست کردیا تھا جب کہ فوجی سرکاری اسکول پشاور پر دہشت گردوں کے حملے سے 150افراد جن میں بیشتر بچے تھے ہلاک ہوگئے تھے ۔ اقوام متحدہ ‘ یوروپی یونین ‘ ایمنسٹی انٹرنیشنل اور ہیومن رائٹس واچ کے علاوہ کئی مقامی گروپس نے حکومت سے سزائے موت پر تعمیل ترک کردینے کی خواہش کی تھی لیکن حکومت نے ایسا کرنے سے انکار کردیا تھا اور کہا تھا کہ اس سزا سے عسکریت پسندی اور دیگر جرائم کی حوصلہ شکنی ہوتی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT