Thursday , September 20 2018
Home / سیاسیات / مایوس بی جے پی کا اب رائے دہندوں کو منقسم کرنے فرقہ وارانہ کارڈکا استعمال

مایوس بی جے پی کا اب رائے دہندوں کو منقسم کرنے فرقہ وارانہ کارڈکا استعمال

انتخابی مہم سے وکاس کا موضوع غائب :دلت لیڈر جگنیش میوانی
وڈگام (گجرات) 11 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) دلت لیڈر جگنیش میوانی نے آج بی جے پی پر تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ بی جے پی آخرکار اپنی اصلیت کا مظاہرہ کرتے ہوئے تھک ہار کر فرقہ وارانہ کارڈ کھیلتے ہوئے رائے دہندوں کو منقسم کرنے کی کوشش کررہی ہے۔ اُنھوں نے کہاکہ اسمبلی انتخابات میں بی جے پی کو اپنی شکست کا یقین ہوچکا ہے۔ اِسی لئے وہ ترقی اور ڈیولپمنٹ کے موضوع کو پس پشت ڈالتے ہوئے رائے دہندوں کو فرقہ وارانہ خطوط پر بانٹ رہی ہے۔ جگنیش میوانی جوکہ حلقہ اسمبلی وڈگام سے آزاد امیدوار کی حیثیت سے مقابلہ کررہے ہیں، کہاکہ بی جے پی محض 50 ہزار روپئے کے لئے اُن کو نشانہ بنارہی ہے جو اُنھیں سوشیل ڈیموکریٹک پارٹی آف انڈیا کی جانب سے موصول ہوئے تھے۔ مگر بی جے پی اِس بات کی وضاحت کرنے سے گریزاں نظر آرہی ہے کہ بی جے پی صدر امیت شاہ کے فرزند جیش شاہ کی آمدنی میں 16 ہزارگنا اضافہ کیسے اور کیونکر ہوا ہے؟ اُنھوں نے کہاکہ اگر ایس ڈی پی آئی کا تعلق کسی دہشت گرد گروپ سے ہے تو اتنے دنوں تک امیت شاہ، راجناتھ سنگھ، نریندر مودی اور روپانی نے خاموشی کیوں اختیار کرلی تھی۔ 35 سالہ دلت لیڈر نے کہاکہ بی جے پی اُنھیں محض اِس لئے نشانہ بنارہی ہے کیونکہ اُس کے پاس گجرات انتخابات میں کوئی ایجنڈہ ہی نہیں ہے۔ اُنھوں نے کہاکہ اِس طرح کے شاطرانہ حربے اب کامیاب نہیں ہوسکتے۔ چونکہ گجرات کے عوام اچھی طرح جانتی ہے کہ جگنیش اِس معاملہ میں بے قیصور ہے۔ جگنیش میوانی کے مطابق بی جے پی اپنی پوری قیادت بشمول وزیراعظم نریندر مودی، پارٹی سربراہ امیت شاہ، چیف منسٹر وجئے روپانی، چیف منسٹر یوپی یوگی ادتیہ ناتھ اور کئی مرکزی وزراء کو الیکشن مہم میں جھونکتے ہوئے عوام کو دھوکہ دے رہی ہے۔ تاہم میں مکمل طور پر کامیابی کے حوالے سے پُراعتماد ہوں۔

TOPPOPULARRECENT