Saturday , November 18 2017
Home / شہر کی خبریں / متاثرہ کسانوں کی رپورٹ مرکزی و ریاستی حکومتوں کو پیش کی جائے گی

متاثرہ کسانوں کی رپورٹ مرکزی و ریاستی حکومتوں کو پیش کی جائے گی

جئے کسان آندولن کا دورہ مختلف اضلاع ، کودنڈا رام اور دیگر افراد کی پریس کانفرنس
حیدرآباد ۔ 12 ۔ اکٹوبر : ( سیاست نیوز ) : ملک کے کسانوں کی بہبودی کے لیے چلائی جانے والی قومی تحریک ’ جئے کسان آندولن ‘ کے تحت ملک بھر بشمول تلنگانہ کے پریشان حال کسانوں کے خود کشی واقعات اور انہیں درپیش مسائل سے مرکزی و ریاستی حکومتوں کو رپورٹ روانہ کرنے کی غرض سے نیشنل کنوینر جئے کسان آندولن مسٹر یوگیندر یادو کی زیر قیادت مرکزی ٹیم نے 2 تا 15 اکٹوبر آندولن کے زیر اہتمام ’ سمویدن یاترا ‘ منظم کی ہے جس کا آغاز 2 اکٹوبر کو ریاست کرناٹک کے یادگیر سے کیا گیا اور 3 اور 4 اکٹوبر کو تلنگانہ کے اضلاع محبوب نگر ، رنگاریڈی ، میدک اور نظام آباد کے خشک سالی سے متاثرہ مختلف علاقوں کا دورہ کرتے ہوئے خود کشی کرنے والے کسانوں کے افراد خاندانوں سے ملاقاتیں کیں اور کسانوں کو درپیش مسائل کی تفصیلات پر ایک رپورٹ تیار کر کے چیف منسٹر تلنگانہ مسٹر کے چندر شیکھر راؤ کے حوالے کی جائے گی تاکہ کسانوں کو درپیش مسائل کی یکسوئی ممکن ہوسکے ۔ یہ بات آج یہاں چیرمین رعیتو جے اے سی تلنگانہ پروفیسر کودنڈا رام ، رکن جئے کسان آندولن سوراج ابھیان نیشنل ورکنگ کمیٹی مسٹر عادل محمد ، تلنگانہ ودیا ونتولا قائدین مسرز کے رویندر گوڑ ، چندر شیکھر ، گوپال اور جئے لکشمی نے پریس کانفرنس میں بتائی ۔ انہوں نے بتایا کہ ریاست تلنگانہ جن 4 اضلاع کے خشک سالی سے متاثرہ علاقوں کا دورہ کرنے کے بعد تیار کردہ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ ملک بالخصوص ریاست تلنگانہ کے کسان خشک سالی کی وجہ سے پریشان حال ہیں اور وہ معاشی مسائل کی وجہ سے خود کشی کی راہ اپنانے پر مجبور ہیں اور خشک سالی کے نتیجہ میں روزگار کے حصول کے لیے ہجرت کررہے ہیں ۔ اگر حکومت کسانوں کی جانب توجہ نہ دے تو کسان مزید خود کشیاں کرنے پر مجبور ہوجائیں گے ۔ انہوں نے بتایا کہ رپورٹ میں چیف منسٹر تلنگانہ سے 10 سفارشات پر مشتمل مطالبات پیش کئے گئے ہیں جن میں کسانوں کو تخم اور کھاد کی وقت مقررہ پر سربراہی ، قرضہ کی یکمشت ادائیگی ، زراعت پر منحصر کسانوں کو لون کی فراہمی ، لون کی بروقت فراہمی اور 50 فیصد نقصان کی پابجائی ، ریاست میں MGNREGA کارڈس دئیے جانے پر ستائش ، 150 دن روزگار کی فراہمی کے وعدہ پر موثر عمل آوری ، MGNREGA اسکیم کے تحت مواقع فراہم کرنے ، مشن کاکتیہ کے تحت پانی محفوظ کرنے ، اندرون 15 دن متاثرہ کسانوں کو معاوضہ کی ادائیگی EGS کے کاموں کا جلد آغاز کرنے ، حکومت کی جانب سے کسانوں کو ایکس گریشیا کی ادائیگی میں شفافیت کے علاوہ دیگر شامل ہیں ۔۔

TOPPOPULARRECENT