Wednesday , December 19 2018

متحدہ ریاست کیلئے چیف منسٹر کی جدوجہد کی تائید : کے وینکٹ ریڈی

حیدرآباد 16 فبروری (سیاست نیوز) ریاستی وزیر امداد باہمی مسٹر کے وینکٹ کرشنا ریڈی نے چیف منسٹر این کرن کمار ریڈی کو متحدہ ریاست آندھراپردیش کے کٹر حامی سے تعبیر کرتے ہوئے کہاکہ وہ (چیف منسٹر) متحدہ آندھراپردیش ریاست کی برقراری کیلئے جو بھی فیصلہ و اقدام کریں گے، ان کا بھرپور ساتھ دینے اور مکمل تائید و حمایت کرنے کا اعلان کیا۔ آج

حیدرآباد 16 فبروری (سیاست نیوز) ریاستی وزیر امداد باہمی مسٹر کے وینکٹ کرشنا ریڈی نے چیف منسٹر این کرن کمار ریڈی کو متحدہ ریاست آندھراپردیش کے کٹر حامی سے تعبیر کرتے ہوئے کہاکہ وہ (چیف منسٹر) متحدہ آندھراپردیش ریاست کی برقراری کیلئے جو بھی فیصلہ و اقدام کریں گے، ان کا بھرپور ساتھ دینے اور مکمل تائید و حمایت کرنے کا اعلان کیا۔ آج صبح چیف منسٹر سے کیمپ آفس میں ملاقات کرکے واپسی کے موقع پر اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے وزیر موصوف نے کہاکہ اگر ریاست کی تقسیم عمل میں آنے کی صورت میں پارٹی تبدیل کرنے کی ضرورت پڑنے پر وہ اقدام ان کیلئے انتہائی سخت و تکلیف دہ ضرور ہوگا۔ لیکن وہ کسی اقدام سے قبل اپنے تمام حامیوں و بہی خواہوں سے تفصیلی تبادلہ خیال و مشورہ کرنے کے بعد ہی کوئی قطعی فیصلہ کریں گے۔ اُنھوں نے مزید کہاکہ دہلی میں آندھراپردیش نان گزیٹیڈ آفیسرس اسوسی ایشن کے زیراہتمام منعقد ہونے والے جلسہ عام میں سیما آندھرا سے تعلق رکھنے والے مرکزی وزراء کی شرکت متوقع ہے۔ مسٹر کے وینکٹ کرشنا ریڈی نے ریاست کی تقسیم کے ذریعہ علیحدہ ریاست تلنگانہ کی تشکیل عمل میں لانے مرکزی حکومت کے اقدام کو اپنی سخت تنقید کا نشانہ بنایا اور کہاکہ متحدہ ریاست آندھراپردیش کی برقراری کے لئے وہ اپنی ممکنہ کوشش میں مصروف ہیں اور مرکزی حکومت پر تمام سیما آندھرا سے تعلق رکھنے والے قائدین بشمول مرکزی وزراء، ارکان پارلیمان، ریاستی وزراء و ارکان اسمبلی کے علاوہ دیگر جماعتوں کے قائدین بھی اپنے دباؤ کو برقرار رکھے ہوئے ہیں۔ وزیر امداد باہمی نے مرکزی حکومت سے سیما آندھرا عوام کے جذبات و احساسات کو پیش نظر رکھتے ہوئے ریاست آندھراپردیش کی تقسیم کو روکنے کا مطالبہ کیا۔

TOPPOPULARRECENT