Thursday , July 19 2018
Home / اضلاع کی خبریں / !متحدہ کریم نگر میں تلگودیشم اور کانگریس میں مفاہمت

!متحدہ کریم نگر میں تلگودیشم اور کانگریس میں مفاہمت

ریاستی سطح پر فرنٹ کی تشکیل، نشستوں کی تقسیم موضوع بحث

کریم نگر ۔ /25 مارچ (سید محی الدین کی رپورٹ) 2019 ء کے منعقد شدنی عام چناؤ میں تقریباً تمام سیاسی پارٹیوں میں مفاہمت کے معاملے میں غور و فکر شروع ہوچکا ہے ۔ لیکن کس پارٹی کا کس پارٹی کے ساتھ اتحاد ہوگا ،کس طرح سے نشستوں کا بٹوارہ ہوگا ، ایک سنجیدہ مسئلہ ہے ۔ 2019 ء کے چناؤ میں بی جے پی اور ٹی آر ایس کے سوائے کامیابی کا امکان رکھنے والی سبھی پارٹیوں سے مفاہمت کیلئے ہم تیار ہیں ، کانگریس کا کہنا ہے ۔ اسی دوران کانگریس اور ٹی ڈی پی ، سی پی آئی کے گٹھ بندھن سے چناؤ میں اترا جائے گا ۔ دوسری جانب ٹی ڈی پی قائدین سے اسمبلی نشستوں کو مختص کئے جانے کے بارے میں کسی بھی قسم کا سمجھوتہ نہیں ہوپایا ہے ۔ اس لئے کہ ٹی ڈی پی سے بہت سارے اہم قائدین کانگریس اور ٹی آر ایس میں شامل ہوچکے ہیں ۔ جس کی وجہ سے متحدہ ضلع کریمنگر میں افواہیں پھیل چکی ہیں کہ کریم نگر میں ایل رمنا ، تاج الدین اور ای پدی ریڈی بچے ہوئے ہیں ۔ ای پدی ریڈی پارٹی چھوڑنے کی خبر پھیل گئی ہے ۔ اب ضلع میں ٹی ڈی پی کو دو نشستوں پر اکتفا کرنا پڑے گا ۔ایک نشست سی پی آئی کو مختص کرنا ضروری ہے ۔ اس طرح ٹی ڈی پی اور کانگریس میں مفاہمت مشکل نظر آرہی ہے ۔ آنے والے چناؤ میں کسی بھی طرح کامیابی حاصل کرنا ضروری ہے ۔ اس سلسلے میں ریاستی سطح پر کانگریس فرنٹ کی تشکیل میں ہے ۔ تلگودیشم کو بھی اس میں شامل کرنے کی بات چل رہی ہے ۔ ویسے تلنگانہ میں ٹی ڈی پی بالکل ہی کمزور ہوچکی ہے ۔ ایم پی اور ایم ایل اے کے ٹکٹ پر بھی سمجھوتہ طئے پارہا ہے ، کہا جارہا ہے ۔ کریم نگر میں نشستوں کی تقسیم کا اصل مسئلہ ہے ۔ حلقہ حضور آباد ہے ۔ اے گولاپدی ریڈی سابق وزیر ہمارے ممکن کوشش کررہے ہیں ۔ سی پی آئی کو حضور آباد کی ایک نشست دی جائے گی ۔ اس دوران ٹی ڈی پی سے کانگریس میں شامل ہونے والے وجئے رمنا راؤ کے ستیہ نارائن ایم ستیم پریشان ہیں کہ مفاہمت کا فیصلہ پکا ہوجائے تو ہمارا کیا ہوگا الجھن میں ہیں ۔ جون کے بعد مفاہمت کے معاملے پارٹی اہم قائدین میں قطعی فیصلہ ہوگا ۔ جگتیال ، منتھنی ، دھرم پوری ، ماناکنڈور کانگریس کے لئے مختص ہوں گی ۔ ٹی جیون ریڈی سریدھر بابو ، لکشمن کمار اور آرے پلی موہن اب نشستوں پر کوئی بات چیت نہیں ہوئی ۔ ٹی ڈی پی سے کانگریس میں شریک ہونے والے ایم ستیم، وجئے رمنا راؤ ، کوم پلی ، ستیہ نارائنا ، چپہ ڈنڈی پداپلی مانا کنڈور پر ان کی نظر ہے ۔ گزشتہ چناؤ میں ناکام ایس دیویا گجیلا کانتم اب اپنی نشستوں کیلئے ٹکٹ مانگ رہے ہیں ۔ پداپلی سے سریش ریڈی ، وجئے رمنا راؤ ، جی کے ریڈی ، گتلا سوبیا ، رام گنڈم ویملواڑہ سرسلہ کورٹلہ خواہش مند ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT