Friday , June 22 2018
Home / شہر کی خبریں / مجالس بلدیہ کے انتخابات کیلئے آج اعلامیہ کی اجرائی

مجالس بلدیہ کے انتخابات کیلئے آج اعلامیہ کی اجرائی

آندھرا پردیش میں انتخابی موسم، بلدیات اسمبلی اور پارلیمانی انتخابات کا سامنا

آندھرا پردیش میں انتخابی موسم، بلدیات اسمبلی اور پارلیمانی انتخابات کا سامنا

حیدرآباد 9 مارچ (پی ٹی آئی) ایک ایسے وقت جب سارا ملک اب سے چند ہفتوں بعد انتخابات کا سامنا کرے گا آندھرا پردیش کے رائے دہندوں کو بھی اس عمل میں بے پناہ مصروفیت رہے گی کیونکہ ریاست کو مجالس مقامی سے لیکر پارلیمانی سطح تک اپنے نمائندوں کا انتخاب کرنے کی ضرورت ہوگی جبکہ ریاست کی تقسیم کا عمل بدستور محض ایک رسمی ضابطہ کی حیثیت سے برقرار ہے۔ آندھرا پردیش میں 30 اپریل اور 7 مئی کے درمیان بیک وقت لوک سبھا کے علاوہ ریاستی قانون ساز اسمبلی کے انتخابات منعقد ہوں گے لیکن اتنا ہی نہیں لوک سبھا اور اسمبلی انتخابات سے قبل غیر منقسم آندھرا پردیش کے 10 میونسپل کارپوریشنس اور 146 بلدیات کے انتخابات 30 مارچ کو منعقد ہوں گے اور اگر یہ بھی کافی نہیں ہوگا تو ریاستی الیکشن کمیشن اب سپریم کورٹ احکام کی اجرائی کے بعد منڈل پریشد علاقائی حلقوں (ایم پی ٹی سی ) اور ضلع پریشد علاقائی حلقوں ( ٹی پی ٹی سی ) کے انتخاب کیلئے رائے دہی کی تیاریوں میں مصروف ہوچکا ہے۔نئی ریاست تلنگانہ 2 جون کو وجود میں آئے گی جب باضابطہ طور پر اس ریاست کی تاسیس ہوگی ۔ آندھرا پردیش ریاستی الیکشن کمیشن کا یہ نظریہ ہے کہ عام انتخابات کے اعلامیہ کا اثر مجالس بلدیہ کے انتخابات پر نہیں ہونا چاہئے کیونکہ ریاستی الیکشن کمیشن بھی ایک دستوری اور خود اختیار ادارہ ہے۔ بلدیات کے انتخابات کا اعلان آندھرا پردیش کی سیاسی جماعتوں کے لئے عام طور پر ناپسندیدہ رہا کیونکہ پارلیمانی اور اسمبلی انتخابات سے قبل ان جماعتوں پر مزید بوجھ پڑا ہے بعض سیاسی جماعتوں کو یہ ڈر بھی ہیں کہ مجالس بلدیہ کے انتخابات میں ناقص مظاہرہ کے اثرات عام انتخابات پر بھی مرتب ہوسکتے ہیں۔توقع ہے کہ ریاستی الیکشن کمیشن پنچایت راج انتخابات کے لئے کل یعنی پیر کو اعلامیہ جاری کرے گا ۔ سرکاری مشنری پر انتخابات کے پیش نظر دباو میں زبردست اضافہ ہوگا ۔

TOPPOPULARRECENT