Saturday , December 16 2017
Home / شہر کی خبریں / مجلس سے ایم جے اکبر نشانہ ، محمد علی شبیر کی سخت مذمت

مجلس سے ایم جے اکبر نشانہ ، محمد علی شبیر کی سخت مذمت

حیدرآباد کے ایم پی کی حرکت پر قائد تلنگانہ کونسل کا ردعمل
حیدرآباد ۔ 9 ۔ مارچ : ( سیاست نیوز ) : قائد اپوزیشن تلنگانہ قانون ساز کونسل مسٹر محمد علی شبیر نے صدر مجلس و رکن پارلیمنٹ اسد الدین اویسی کی جانب سے ایماندار مسلم آئی ایف ایس آفیسر ایم جے اکبر کو نشانہ بنانے کی سخت مذمت کی ہے ۔ مسٹر محمد علی شبیر نے کہا کہ محکمہ اقلیت بہبود میں بحیثیت ڈائرکٹر خدمات انجام دینے والے محمد جلال الدین اکبر کا ایماندار اور دیانت دار آفیسرس میں شمار ہوتا ہے ۔ جنہوں نے اپنی خدمات کے معاملے میں کبھی کوئی سمجھوتہ نہیں کیا بلکہ خدمات کو بڑی ذمہ داری سے انجام دیا جس کی جتنی تعریف کی جائے کم ہے ۔ انہوں نے کئی قیمتی وقف اراضیات کا تحفظ کیا اور کئی جائیدادوں کو برباد ہونے سے بھی بچایا ہے اور کئی اسکامس کا انکشاف کیا ۔ لینڈ گرابرس کے بے قاعدگیوں کو منظر عام پر لایا اور مسلم قبرستانوں میں متولیان کی جانب سے ایک تا دو لاکھ روپیوں میں فروخت کی جانے والی قبروں کی اراضی اور دیگر بے قاعدگیاں کرنے والوں کے خلاف سخت اقدامات کئے ۔ اپنی کارکردگی سے وقف جائیدادوں کا تحفظ کرنے اور خدمات سے اقلیتوں بالخصوص مسلمانوں کا دل جیت لینے والے ایماندار آفیسر ایم جے اکبر کی حوصلہ افزائی کرنے اور ملت کے اثاثوں کا تحفظ کرنے کے لیے ان کا ساتھ دینے کے بجائے صدر مجلس اور رکن پارلیمنٹ حیدرآباد اسد الدین اویسی نے چیف سکریٹری کو مکتوب روانہ کرتے ہوئے انہیں ڈائرکٹر اقلیتی بہبود سے ہٹانے کا مطالبہ کیا اور چیف سکریٹری ڈاکٹر راجیو شرما نے چستی پھرتی کا مظاہرہ کرتے ہوئے انہیں فوری عہدے سے ہٹادیا جس کی وہ سخت مذمت کرتے ہیں ۔

 

مسٹر محمد علی شبیر نے کہا کہ مجلس کے قائدین غیر ایماندار بدعنوان عہدیدار ، لینڈ گرابرس ، روڈی شیٹرس اور غیر سماجی عناصر سے محبت کررہے اور صدر مجلس و رکن پارلیمنٹ حیدرآباد اسد الدین اویسی ایماندار عہدیدار کے خلاف چیف سکریٹری سے شکایت کررہے ہیں قائد اپوزیشن تلنگانہ قانون ساز کونسل نے کہا کہ ایک مسلم آئی ایف ایس عہدیدار کے خلاف 40 لیٹر ڈیزل زیادہ استعمال کرنے کا صدر مجلس کی جانب سے الزام عائد کرتے ہوئے انہیں عہدے سے ہٹانے کا مطالبہ کرنا مضحکہ خیز ہے ۔ ریاست میں 6یا 7 مسلم آل انڈیا سرویس کے عہدیدار ہیں انہیں نشانہ بنانے سے مجلس کے مسلم چمپئن ہونے کا بھانڈا پھوٹ گیا ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT