Tuesday , January 16 2018
Home / Top Stories / !مجلس کا کرناٹک میں 60 اور تلنگانہ میں صرف 30 نشستوں پر مقابلہ

!مجلس کا کرناٹک میں 60 اور تلنگانہ میں صرف 30 نشستوں پر مقابلہ

متحدہ آندھراپردیش اور موجودہ تلنگانہ میں سیاسی وسعت کو غیراہمیت

حیدرآباد ۔ 16 ڈسمبر (سیاست نیوز) عالمی تلگو کانفرنس میں صدر مجلس کی تلگو زبان میں تقریر نے ریاست تلنگانہ کی سیاست میں ایک نئی بحث چھیڑ دی ہے۔ ملک کی دیگر ریاستوں میں انتخابی مقابلہ کے بعد کیا اب مجلس پڑوسی ریاست کرناٹک میں 60 نشستوں اور تلنگانہ میں 30 حلقوں پر مقابلہ کرے گی؟ شہر میں گذشتہ 60 برسوں سے اپنا دبدبہ رکھنے والی جماعت نے متحدہ ریاست آندھراپردیش اور موجودہ تلنگانہ ریاست میں بھی اپنی سیاسی وسعت کو اہمیت نہیں دی بلکہ شہر ہی تک محدود ہوگئی تھی لیکن مہاراشٹرامیں (24)، بہار(6)، اترپردیش (38)میں مقابلہ کے بعد کرناٹک میں 60 حلقوں پر مقابلہ کا اعلان کیا گیا اور اب ریاست تلنگانہ کے تقریباً ہر ضلع سے نمائندگی کرنے کا ارادہ رکھتی ہے۔ آئے دن قومی ٹی وی نیوز چینلوں پر ملک کے مسلم قائد کے طور پر پیش ہونے والے صدر مجلس اب اپنی ریاست پر توجہ دے رہے ہیں اور پارٹی کو وسعت دینے کے ساتھ ساتھ سیاسی طاقت میں اضافہ کا منصوبہ تیار کرتے ہوئے ایسا سمجھا جارہا ہیکہ 25 تا 40 حلقوں پر مقابلہ کیا جائے گا۔ شہر حیدرآباد میں ان دنوں عالمی تلگو کانفرنس جاری ہے اور اس عالمی تلگو کانفرنس میں شرکت کرتے ہوئے صدر مجلس نے تلگو زبان میں تقریر کی جو شرکاء کانفرنس میں حیرت کا سبب بن گئی جو سیاسی قائدین میں ہلچل اور ایک نئی بحث کا سبب بن گئی۔ تاہم سیاسی ماہرین اور سیاسی تجزیہ کاروں کی جانب سے مختلف قیاس آرائیاں جاری ہیں۔ اگرچہ کہ تلنگانہ کی ریاستی حکومت اور مجلس میں ساجھیداری ہے جس کا ثبوت گذشتہ اسمبلی سیشن میں دیکھا گیا اور اب تلگو زبان میں تقریر کے بعد یہ چرچہ شروع ہوگیا ہے۔ واضح رہیکہ سابق میں مجلس نے نظام آباد اور عادل آباد کے اضلاع میں مجالس مقامی کے انتخابات میں حصہ لیا تھا اور ضلع محبوب نگر کے اسمبلی حلقہ سے بھی میدان میں تھی اور چند روز قبل ہی صدر مجلس نے اسبات کا اعلان کیا کہ وہ کرناٹک کے اسمبلی انتخابات میں مقابلہ کریں گے اور تقریباً 60 حلقوں سے مجلس مقابلہ کا ارادہ رکھتی ہے۔ ریاست کرناٹک میں کانگریس کا راست مقابلہ بی جے پی سے ہے اور مجلس کے وہاں جانے سے سیاسی منظر بدلنے کے قوی امکانات پائے جاتے ہیں۔ بعض غیرمصدقہ کوششوں سے 160 نشستوں پر مقابلہ کی اطلاع حاصل ہورہی ہے۔

TOPPOPULARRECENT