Friday , October 19 2018
Home / سیاسیات / مجوزہ کنڑا پرچم پر بی جے پی کی خاموشی کی مذمت

مجوزہ کنڑا پرچم پر بی جے پی کی خاموشی کی مذمت

کرناٹک کیلئے عزت نفس کے فقدان کا الزام، کانگریس کا بیان
بنگالورو۔ 9 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) کرناٹک میں ریاستی اسمبلی کے لیے ہونے والے انتخابات سے قبل چیف منسٹر سدارامیا کی طرف سے مجوزہ سرکاری پرچم کی اجرائی کے ایک دن بعد حکمراں کانگریس نے اس مسئلہ پر بی جے پی کی خاموشی کے بارے میں سوال اٹھایا ہے۔ کانگریس نے یہ سوال بھی کیا کہ آیا صدر بی جے پی ریاستی یونٹ بی ایس یدی یورپا کے بشمول تمام بی جے پی ارکان اس پرچم کی منظوری کے لیے مرکز پر دبائو ڈالیں گے۔ کانگریس کی کرناٹک یونٹ نے ٹوئٹر پر کہا کہ ’’کرناٹک کے ریاستی پرچم پر بی جے پی کی مکمل خاموشی دراصلکنڑا کے لیے عزت نفس کا فقدان ہے۔‘‘ کانگریس نے بی جے پی سے یہ سوال بھی کیا کہ ’’آیا بی جے پی کے ارکان پارلیمنٹ اور شری یدی یورپا اس (پرچم) کی جلد منظوری کے لیے مرکز پر دبائو ڈالیں گے۔ ’ناڈا دواجہ‘ (کنرا ریاستی پرچم) زرد، سفید اور سرخ رنگوں پر مشمل ہے۔ اور درمیان میں ’کنڑا بیرونڈا‘ ادوار کی (دیومالائی چڑیا) کی امتیازی علامت ہے۔ سابق ریاست میسورو میں بھی یہ چڑیا شاہی علامت تھی۔ تین رنگوں پر مشتمل کنڑا پرچم میں شامل زرد رنگ دولت اور شادمانی سفید رنگ امن و اتحاد اور سرخ رنگ فخر و جراتمندی کی نمائندگی کرتا ہے۔ سدارامیا نے گزشتہ روز اس پرچم کو کنڑا عوام کے لیے فخر کی علامت قرار دیا تھا اور کہا تھا کہ اس کو بغرض منظوری مرکز کو روانہ کیا جائے گا۔ ریاستی حکومت کی طرف سے گزشتہ سال تشکیل شدہ ایک کمیٹی نے کرناٹک کے لیے علیحدہ پرچم کی نمائندگی کی تھی۔ یدی یورپا نے کہا ہے کہ ان کی پارٹی علیحدہ ریاستی پرچم کی مخالف نہیں ہے۔ لیکن اس نے اس مسئلہ پر اپوزیشن قائدین سے بات چیت کے بغیر پیانل تشکیل دینے ان کے یکطرفہ فیصلہ کی مذمت کی تھی۔ بی جے پی نے قبل ازیں سدارامیا پر یہ الزام بھی عائد کیا تھا کہ وہ ریاست میں اپریل /مئی کے دوران ہونے والے اسمبلی انتخابات سے قبل اس مسئلہ کو سیاسی رنگ دے رہی ہے۔ علیحدہ علیحدہ پرچم کے لیے پیانل تشکیل دینے حکومت کے فیصلہ پر چند گوشوں نے تنقید کرتے ہوئے اس کا جموں و کشمیر سے تقابل کیا تھا جس کو دستور کی دفعہ 370 کے تحت خصوصی موقف حاصل ہے۔

TOPPOPULARRECENT