Tuesday , December 18 2018

’’مجھے ایک لاکھ روپئے جنید کی والدہ کے قدموں میں رکھنے دیجئے‘‘ : رامانونی

ساہتیہ اکیڈیمی ایوارڈ یافتہ ملیالم رائٹر نے انعامی رقم حافظ جنید کے نام کردیا

نئی دہلی۔ 13 فروری (سیاست ڈاٹ کام) ساہتیہ اکیڈیمی دی نیشنل اکیڈیمی آف لیٹرس نے پیر کے دن مختلف ہندوستانی زبانوں کے 23 ممتاز شخصیتوں کو سالانہ ساہتیہ اکیڈیمی ایوارڈ سے نوازا۔ ایوارڈ یافتگان کو کانسہ کے تمغہ کے ساتھ ساتھ شال اور ایک لاکھ پر مشتمل انعامی رقم حوالے کی، تاہم اس موقع پر ملیالم رائٹر کے پی رامانونی سب سے زیادہ اس موقع پر چھائے رہے جب انہوں نے اپنے انعامی رقم کو گزشتہ سال ٹرین میں ایک جنونی افراد کے ہاتھوں ٹرین میں بے رحمی سے قتل کردیئے گئے حافظ جنید کی والدہ کے حوالے کردیا۔ رامانونی جن کی کتاب “Daivathinete Pusthakam” ملک کے فرقہ وارانہ حالات پر مبنی ہے، نے اپنے پاس صرف 3 روپئے رکھتے ہوئے مابقی ایک لاکھ روپئے حافظ جنید کی والدہ سائرہ بیگم کے حوالے کردیا۔ واضح رہے کہ عید کی شاپنگ کرنے کے بعد حافظ جنید دہلی سے واپس اپنے گاؤں ہریانہ جارہے تھے کہ جب انہیں ٹرین میں ہی چند جنونی افراد نے چاقوؤں سے پے در پے حملہ کرتے ہوئے شہید کردیا تھا۔ اس موقع پر میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے جناب رامانونی نے کہا کہ مجھے یہ انعامی رقم حافظ جنید کی والدہ کے قدموں میں رکھنے دیجئے تاکہ وہ گناہ عظیم جو کیا گیا ہے ، اس کی تلافی کی جاسکے۔

TOPPOPULARRECENT