Wednesday , September 26 2018
Home / Top Stories / محبوبہ حکومت ،آر ایس ایس کے خاکوں میں رنگ بھرنے میں مصروف

محبوبہ حکومت ،آر ایس ایس کے خاکوں میں رنگ بھرنے میں مصروف

وادی کے موجودہ حالات 90 کے دہے سے بدتر، پی ڈی پی کا ایمان محض کرسی ٔ اقتدار ہے : فاروق عبداللہ
سری نگر۔ 20 فروری (سیاست ڈاٹ کام) نیشنل کانفرنس کے صدر و رکن پارلیمان ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے الزام لگایا ہے کہ جموں وکشمیر کی حکمران جماعت پی ڈی پی آر ایس ایس کے خاکوں میں رنگ بھرنے میں مصروف ہے ۔انہوں نے کہا کہ پی ڈی پی کا ایمان ‘کرسی’ ہے اور وہ اس کے لئے کسی بھی حد تک گر سکتی ہے ۔ فاروق عبداللہ نے ان باتوں کا اظہار منگل کے روز یہاں اپنی رہائش گاہ پر پارٹی لیڈران، عہدیداران اور متعدد عوامی وفود کے ساتھ تبادلہ خیالات کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہا ‘ریاستی اور مرکزی سرکار کی مسلسل غلطیوں کی وجہ سے جموں وکشمیر میں غیریقینی صورتحال ہر گزرتے دن کے ساتھ بڑھ رہی ہے ۔ غیر سنجیدہ فیصلوں، غلط پالیسی اور غیر دانشمندانہ اقدامات یہاں ناخوشگوار فضاء قائم ہوئی جس کا سو فیصدی خمیازہ اہل کشمیر کو بھگتنا پڑ رہاہے ‘۔فاروق عبداللہ نے کہا کہ ریاست اس وقت بدترین سیکورٹی، سیاسی، انتظامی اور اقتصادی بدحالی کی شکار ہے جبکہ یہاں لوگوں کو دور دور تک مایوسی کے سوا کچھ نظر نہیں آتا، حکمران جماعت پی ڈی پی آر ایس ایس کے خاکوں میں رنگ بھرنے میں مصروف ہے اور عوام کا کوئی پرسان حال نہیں۔انہوں نے کہا’ اگر یہ کہا جائے کہ اس وقت وادی کے حالات 90ء سے بدتر ہے تو غلط نہ ہوگا۔

عوام مایوسی اور حالات کی ابدتری کا اندازہ اس بات سے بخوبی لگایا جاسکتا ہے کہ پارلیمانی حلقہ اننت ناگ کے لئے 2سال سے انتخابات منعقد نہیں ہورہے ہیں’۔نیشنل کانفرنس صدر نے کہا کہ پی ڈی پی بانی مرحوم مفتی محمد سعید کے انتقال کے بعد پی ڈی پی والوں نے بی جے پی کے ساتھ دوبارہ اتحاد کرنے کے لئے 2ماہ تک ڈرامہ بازی کی اور لوگوں کو یہ بات باور کرانے کی کوشش کی گئی کہ ایجنڈا آف الائنس کو لیکر رسہ کشی چل رہی ہے ۔انہوں نے کہا ‘ لوگوں کو بتایا گیا کہ فورسز کو حاصل خصوصی قانون افسپا کی منسوخی، 2بجلی گھروں کی واپسی ، سیلابی امداد اور اعتماد سازی کے ماحول کے بعد ہی پی ڈی پی دوبارہ بی جے پی کے ساتھ اتحاد کرے گی۔لیکن سب کچھ عبث ،سارے شوشے سراب ثابت ہوئے ۔ محبوبہ مفتی نے پرانی تنخواہ پر ہی کام کرکے اقتدار کو غنیمت سمجھا۔آج محبوبہ مفتی کو وزیر اعلیٰ بنے 2سال کا عرصہ ہوگیا لیکن عوام کو جو سبز باغ دکھائے گئے اُن میں سے ایک بھی پورا نہیں ہوا۔ پی ڈی پی والوں نے افسپا کی منسوخی کو بی جے پی کے ساتھ اتحاد کی بنیاد جتلایا تھا لیکن آج محبوبہ مفتی کہتی ہیں کہ افسپا کی منسوخی کے لئے وقت موزون نہیں’۔ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے کہا کہ ایک طرف اس بات کے دعوے کئے جارہے ہیں کہ پتھراؤ اور سنگ بازی ختم ہوگئی ہے اور دوسری جانب آئے دن نوجوانوں کو سنگ بازی کے الزام میں گرفتارکیا جارہا ہے ۔انہوں نے کہا’ جتنے پی ایس اے گذشتہ ایک دہائی میں عائد کئے گئے تھے محبوبہ مفتی نے اپنے دورِ حکومت کے صرف دو سال میں اُس سے زیادہ نوجوانوں پر پبلک سیفٹی ایکٹ عائد کیا۔ شبانہ تلاشیوں، کریک ڈاؤنوں اور توڑ پھوڑکا سلسلہ اب معمول بن کر رہ گیا ہے ۔90ء میں بھی اس تعداد میں کریک ڈاؤن اور چھاپہ مار کارروائیاں نہیں ہوتی تھیں جس تعداد میں آج ہورہے ہیں’۔فاروق عبداللہ نے مرکزی حکومت سے اپیل کی کہ زیادہ دیر ہونے سے قبل صحیح فیصلے لیں اور جموں وکشمیر میں امن کی بحالی کے لئے ٹھوس اقدامات اُٹھائے جائیں، جن میں پاکستان کے ساتھ مذاکرات اور اچھے تعلقات سرفہرست ہونے چاہیں۔ اس کے ساتھ ساتھ کشمیریوں کا اعتماد اور بھروسہ جیتنے کے لئے بھی بروقت فیصلے لینا ضروری ہے۔اس موقع پر پارٹی جنرل سیکریٹری علی محمد ساگر ، نائب صدر چودھری محمد رمضان ، عرفان احمد شاہ اور دیگر موجود تھے۔

TOPPOPULARRECENT