Sunday , December 17 2017
Home / کھیل کی خبریں / محدود اوورز کی کرکٹ بولروں سے زیادتی؟

محدود اوورز کی کرکٹ بولروں سے زیادتی؟

لاہور ، 8 سپٹمبر (سیاست ڈاٹ کام) محدود اووز کی کرکٹ نے بیٹسمنوں کے سامنے گیند بازوں کو مظلوم بنا دیا ہے۔ ونڈے اور ٹی ٹوئنٹی میں رنز کے انبار سے کرکٹ مضحکہ خیز بنتی جا رہی ہے۔ بیاٹ اور گیند میں عدم توازن محدوو اوورز کی کرکٹ کیلئے اچھی بات نہیں ہے۔ ونڈے اورٹی ٹوئنٹی میچوں میں رنوں کے انبار کو ’’بولروں کی موت‘‘ قرار دیا جانے لگا ہے۔ 10 دن میں 10 برس پرانے کرکٹ کے دو مشکل ترین ریکارڈ چکنا چور ہوگئے۔ ناٹنگھم ونڈے میں پاکستان کے خلاف انگلینڈ نے تاریخ کا سب سے بڑا اسکور 444/3 بنا ڈالا۔ اسی طرح ٹی ٹوئنٹی میں سری لنکا کا 260 رنز کا ریکارڈ بھی ٹوٹ گیا۔ آسٹریلیا نے پالیکلے میں میزبانوں کو 263 رنز کے پہاڑ تلے دبا دیا ۔ ان دونوں میچوں میں بولرز بے بسی کی تصویر بنے دکھائی دیئے۔ بیاٹ اور گیند کے درمیان تیزی سے بڑھتی خلیج شائقین کو کھیل سے بیزار کرسکتی ہے۔ انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) کو کرکٹ میں اس عدم توازن کا نوٹس لینا ہوگا۔ کھیل کی دلچسپی برقرار رکھنے کیلئے ’پاور پلے‘ قوانین کی تبدیلی ناگزیر ہوچکی ہے۔ کھیل کی عالمی گورننگ باڈی کو بیاٹ کی موٹائی یا چوڑائی پر بھی سر جوڑنا ہوگا۔ محدود اوورز کی کرکٹ میں بولروں کو برابری کا حق نہ ملا تو کھیل کی شہرت کو نقصان پہنچ سکتا ہے۔

TOPPOPULARRECENT