Thursday , February 22 2018
Home / ہندوستان / محرم کے بغیر حج ، اب تک 180 درخواستیں وصول

محرم کے بغیر حج ، اب تک 180 درخواستیں وصول

حج کمیٹی کے اقدام سے کئی خواتین کو فائدہ ، کیرالا سے سب سے زیادہ درخواستیں

نئی دہلی ۔ /26 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستانی مسلم خواتین کا ایک گوشہ آئندہ سال تلبیہہ کی گونج میں حج کیلئے رخت سفر باندھے گا ان کی لبوں پر لبیک اللھم ہوگا اور ان میں یہ احساس جاگزیں ہوگا کہ ہم بھی لبیک اللھم کے ساتھ حج کی سعادت حاصل کرسکتی ہیں ۔ مرکز نے پہلی مرتبہ یہ فیصلہ کیا کہ 45 سال سے زائد عمر کی خاتون عازمین کی کو محرم کے بغیر کم از کم چار خواتین کے گروپ کی درخواستوں کو قبول کیا جائے ۔ اس سلسلہ میں حج کمیٹی آف انڈیا کے ذریعہ آئندہ سال حج کے لئے اس زمرہ کے تحت درخواست حاصل کی جارہی ہیں ۔ وزارت کے ذرائع کے مطابق /15 نومبر سے اب تک ملک بھر سے سنٹرل حج کمیٹی کو 69,872 درخواستیں وصول ہوئی ہیں جن میں سے آن لائین 55001 درخواستیں داخل کی گئی جبکہ ماباقی درخواستیں راست جمع کروائی گئی ہیں ۔ محرم کے بغیر حج کرنے کی خواہاں خواتین میں اب تک 180 درخواستیں وصول ہوئی ہیں ۔ ان میں کیرالا سے 164 درخواستیں ، اترپردیش سے 8 ، آسام اور مغربی بنگال سے چار چار درخواستیں داخل کی گئی ہیں ۔ ان خواتین نے محرم کے بغیر سفر کرنے میں اپنی دلچسپی کا اظہار کیا ہے ۔ کیرالا کی خاتون صفیہ نے دیگر 3 خواتین کے ساتھ اس زمرہ میں درخواست داخل کی ہے حکومت کے اس اقدام پر خوشی کااظہار کیا اور کہا کہ ان کی ٹیم کے ارکان میں بعض خواتین بیوہ ہیں یا ان کے کوئی فرزند نہیں ہیں یہ خواتین محرم کے نہ ہونے سے حج نہیں کرپارہی تھیں لیکن اب یہ خواتین حج ادا کرسکتی ہیں ۔اس کے لئے کوئی رکاوٹ حائل نہیں ہے ۔ ہم کو خوشی ہے کہ خواتین کو اس کی اجازت دی گئی ہے ۔ ہندوستان کو 1.70 لاکھ کا حج کوٹہ حاصل ہے لیکن ہر سال کوٹہ سے کئی گنا درخواستیں وصول ہوتی ہیں ۔ اس لئے ان کی قرعہ اندازی ہوتی ہے ۔ حج کمیٹی کو حج 2017 ء کے لئے تقریباً 5 لاکھ درخواستیں وصول ہوئی تھیں ۔ وزیر اقلیتی امور مختار عباس نقوی نے کہا کہ محرم کے بغیر خواتین کو حج پر جانے کی اجازت ایک بڑا اور بہترین اصلاحی قدم ہے ۔ اس خصوص میں اب تک ملنے والی درخواستیں حوصلہ افزاء ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT