Tuesday , June 19 2018
Home / اضلاع کی خبریں / محمد ابراہیم کو ٹکٹ سے محرومی، کے سی آر کی اقلیت دشمنی کا مظہر

محمد ابراہیم کو ٹکٹ سے محرومی، کے سی آر کی اقلیت دشمنی کا مظہر

مکتھل۔/15 مارچ، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) ٹی آر ایس سربراہ چندر شیکھر راؤ کی جانب سے حلقہ اسمبلی محبو نگر سے محمد ابراہیم کے بجائے کسی دوسرے کو امیدوار بنائے جانے کے خلاف ضلع کے علماء کرام، مشائخین عظام و دانشور قائدین نے اپنا شدید ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ روزاول ہی سے ٹی آر ایس سربراہ ناقابل اعتماد وبھروسہ ثابت ہوئے ہیں اور وہ کب کیا ب

مکتھل۔/15 مارچ، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) ٹی آر ایس سربراہ چندر شیکھر راؤ کی جانب سے حلقہ اسمبلی محبو نگر سے محمد ابراہیم کے بجائے کسی دوسرے کو امیدوار بنائے جانے کے خلاف ضلع کے علماء کرام، مشائخین عظام و دانشور قائدین نے اپنا شدید ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ روزاول ہی سے ٹی آر ایس سربراہ ناقابل اعتماد وبھروسہ ثابت ہوئے ہیں اور وہ کب کیا بولتے ہی خود انہیں اس کا اندازہ نہیں رہتا بلکہ وہ ایک شاطر سیاسی قائد کے ساتھ ساتھ اپنے کپڑوںکی تبدیلی کی طرح بات کے بدلنے میں بھی مہارت رکھتے ہیں۔ ان قائدین نے کہا کہ کے سی آر صرف بہلاپھسلا کر نرم و میٹھی باتوں کے ذریعہ مسلمانوں کے ووٹوں کو حاصل کرکے اقتدار کا خواب دیکھنا چاہتے ہیں جبکہ مسلمانوں کو کوئی سیاسی معاشی و مادی فائدہ پہنچانا ان کی فطرت و طبیعت کے خلاف ہے۔ مسٹر چندر شیکھر راؤ کو مسلمانوں کے استحصال کے خلاف سخت انتباہ دیتے ہوئے ان قائدین نے کہا کہ مسلمانوں کو سیاسی میدان میں بچکانہ ذہنیت کا حامل تصور کرتے ہوئے انہیں صرف ووٹ بینک کے طور پر استعمال کیا جارہا ہے جبکہ مسلمان انتقامی جذبہ کے تحت اگر اپنی سیاسی حکمت عملی کے مظاہرہ پر مجبور ہوجائیں تو دن کے اجالے میں اقتدار کا خواب دیکھنے والوں کو اپنی اصلیت و حیثیت یاد آجائے گی۔ان حلقوں نے اپنے بیان میں کہا کہ مسلمان اپنے اندر مومنانہ فراست و سیاسی بصیرت رکھتا ہے۔ اس لئے اب مسلمانوں کو اپنی سیاسی بصیرت کے تقاضہ کے تحت یہ لمحہ فکر ہے کہ ایسے دھوکہ باز سیاسی شاطروں کو اپنی کامیاب حکمت عملی کے ساتھ شکست فاش دے کر واضح کردیں کہ مسلمانوں کی منفی و انتقامی سیاست کا کیا نتیجہ ہوتا ہے۔ مستقر مکتھل کے ان دانشوروں نے چندر شیکھرراؤ کے محمد ابراہیم کے ساتھ اس دھوکہ کو پورے مسلمانوں کے ساتھ دھوکہ سے تعبیر کرتے ہوئے کہا کہ مالی و مادی منفعت کے حصول کے بعد اچانک ٹکٹ سے محرومی اور اس سے قبل ٹکٹ دے کر پیچھے سے اپنے کیڈر کو اپنے ہی امیدوار کے خلاف ووٹ کے استعمال کی ہدایت دینے والے چندر شیکھر راؤ صرف یہ سمجھتے ہیں کہ اپنی تقاریر میں چند اردو کے الفاظ استعمال اور اقبال کے اشعار پڑھ کر مسلمانوں کو خوش کردیں تو یہ ان کی زبردست بھول ہے۔

مسلمان دھوکہ دہی، فریب اور تلنگانہ کاز کے عنوان پر آندھرائیوں سے فائیو اسٹار ہوٹلوں میں تلنگانہ عوام کو بیچنے اور فروخت کرنے والوں اور ساتھ ہی ہر آنے والے کو ایم ایل سی کے جھوٹے وعدوں کے ساتھ تسلی دے کر 12فیصد تحفظات کے علاوہ مسلمانوں کو ڈپٹی چیف منسٹری کے کھوکھلے نعروں کے اعلان کی اصلیت کو خوب جانتے ہیں۔ مکتھل کے ان قائدین نے محبوب نگر کے باشعور و غیرت مند مسلمانوں سے پرزور اپیل کی ہے کہ وہ آنے والے اسمبلی انتخابات میں صرف ایک نکاتی ایجنڈہ پر عمل کرتے ہوئے ٹی آر ایس کو شکست دیں اپنے ووٹوں کا استعمال کریں تاکہ تمام سیاسی جماعتوں کو مسلمانوں کے صرف استحصال کے خلاف خاموش پیغام پہنچ جائے۔ بیان دینے والوں میں مولانا عبدالعلیم کوثر قاسمی، مولانا عبدالقوی حسامی، ڈاکٹر شیخ چاند، جناب غلام عباس علی، جناب محمد عثمان امیر جماعت، خطیب عبدالقدیر پرویز، قاضی شہاب الدین، جناب چاند پاشاہ حسامی، مولانا غلام محمد رشیدی، مولانا حافظ نصیر الدین رشادی، حافظ محمد محمود فیضی و دیگر شامل ہیں۔

TOPPOPULARRECENT