Friday , February 23 2018
Home / کھیل کی خبریں / محمد عامر سب سے خطرناک بولر : ویراٹ کوہلی

محمد عامر سب سے خطرناک بولر : ویراٹ کوہلی

نئی دہلی ۔ 16 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستانی کرکٹ ٹیم کے کپتان ویراٹ کوہلی کو نہ صرف دور حاضر کا سب سے بہترین بیٹسمین تصور کیا جاتا ہے بلکہ انہیں دنیا کا نمبر ایک بیٹسمین بھی مانا جاتا ہے جن کے خلاف بہترین بولرس بھی بے بس دکھائی دیتے ہیں لیکن جب خود ویراٹ کوہلی سے سوال کیا گیا کہ ان کی نظر میں سب سے بہترین اور خطرناک بولر کون ہے تو انہوں نے پاکستانی فاسٹ بولر محمد عامر کو مشکل ترین بولر قرار دیا۔ بالی ووڈ اداکار عامرخان نے جب ان سے ایک شو کے دوران سوال کیا کہ ان کی نظر میں سب سے بہترین اور مشکل ترین بولر کون ہے تو انہوں نے کہا کہ اس وقت چند ایک ایسے بولرس ہیں جن کے خلاف اپنی سب سے بہترین صلاحیتوں کو بروئے کار لاتے ہوئے بیٹنگ کرنا پڑتا ہے جس میں محمدعامر سب سے اوپر ہیں۔ کوہلی نے مزید کہا کہ محمد عامر کے خلاف آپ کو اپنا سب سے بہترین کھیل پیش کرنا ہوتا ہے نہیں تو وہ کسی بھی گیند پر آپ کو پویلین کی راہ دکھا دیتے ہیں۔ حالیہ دنوں میں محمد عامر کے ہندوستانی ٹاپ آرڈر بیٹسمینوں کے خلاف مظاہرے غیرمعمولی رہے اور خاص کر 2016ء میں ٹوئنٹی 20 ورلڈ کپ اور 2017ء میں آئی سی سی چمپیئنس ٹرافی کا فائنل شامل ہے۔ آئی سی سی چمپیئنس ٹرافی کے فائنل میں محمدعامر نے ناقابل یقین بولنگ کا مظاہرہ کرتے ہوئے 16 رنز کے عوض 3 کھلاڑیوں کو آوٹ کیا تھا جس میں اوپنر روہت شرما کو صفر پر ایل بی ڈبلیو آوٹ کرنا اور دنیا کے بہترین بیٹسمین ویراٹ کوہلی کو پانچ رنز کے انفرادی اسکور پر پویلین کی راہ دکھانا شامل ہے۔ اس موقع پر کوہلی کو انہوں نے دو گیندوں میں دو مرتبہ آوٹ کیا کیونکہ پہلی گیند پر کوہلی کا سلپ میں اظہر علی نے کیچ چھوڑا تھا۔

Top Stories

مولانا آزاد کی برسی پر تقریب کا انعقاد دہلی ومرکزی حکومت کی جانب سے بڑے لیڈران نے شرکت نہیں کی‘ صدر جمہوریہ ہند کی جانب سے ان کی مزار پر گل پوشی اور نائب صدر جمہوریہ نے اپنا پیغام بھیجا نئی دہلی۔آزادہندو ستا ن کے پہلے وزیر اتعلیم مولانا آزاد کے ساٹھ ویں یوم وفات کے موقع پر آج ان کے مزار واقع مینابازار میں ایک تقریب کا انعقاد ائی سی سی آر کی جانب سے کیاگیا۔افسوس کی بات یہ رہی کہ اس مرتبہ بھی مولانا آزاد کی وفات کے موقع پر دہلی ومرکزی حکومت کی جانب سے کسی بڑے لیڈران نے شرکت نہیں کی۔ چونکہ جامع مسجد پر کناڈہ کے وزیراعظم کو آناتھا اس لئے تقریب کو بہت مختصر کردیا گیاتھا۔ اس دوران صدرجمہوریہ ہند کی جانب سے ان کی مزار پر گل پوشی کی گئی او رنائب صدر جمہوریہ ہند نے اپنا پیغام بھیجا۔ ائی سی سی آر کے ڈائریکٹر نے مولانا آزاد کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہاکہ جہاں تک مولانا آزاد کا تعلق ہے اور انہوں نے جو خدمات انجام دیں انہیں فراموش نہیں کیاجاسکتا۔ ہندو مسلم میں اتحاد قائم کیااس کی مثال ملنا مشکل ہے انہوں نے بھائی چارہ کوفروغ دیا۔ انٹر فیتھ ہارمنی فاونڈیشن آف انڈیاکے چیرمن خواجہ افتخار احمد نے کہاکہ مولانا آزاد نے لڑکیوں کی تعلیم پر بہت زیادہ توجہ دی۔ جب حکومت قائم ہونے کے بعد قلمدان کی تقسیم ہونے لگے تو مولانا آزاد نے تعلیم کا قلمدان لیاتاکہ لڑکیو ں کی تعلیم پر خاص دھیان دیاجاسکے۔ خاص طور سے مسلم لڑکیو ں کی تعلیم پر زیادہ دھیان دیاجائے۔کیونکہ مسلم لڑکیو ں کو پڑھنے کے زیادہ مواقع نہیں مل پاتے ۔ معروف سماجی کارکن فیروز بخت احمد مولانا سے منسوب ایک پروگرام میں پونے گئے ہوئے تھے۔ انہوں نے نمائندہ کو فون پر بتایا کہ مولانا آزاد کی تعلیمات کو قوم نے بھلادیا ہے۔ آج تک ان جیسا لیڈر پیدا نہیں ہوسکا اور افسوس کی بات ہے کہ مولانا آزاد کی برسی یا یوم پیدائش کے موقع پر دہلی یامرکزی حکومت کی جانب سے کوئی بڑا لیڈر شریک نہیں ہوتا۔ ایسا معلوم ہوتا کہ حکومت نے مولانا آزاد کو بھلادیا ہے۔ اس دوران سی سی ائی آر کی ایک کمار مولانا ابولکلام آزاد فاونڈیشن کے چیرمن عمران خان سمیت کافی لوگ موجود تھے۔
TOPPOPULARRECENT