Thursday , June 21 2018
Home / ہندوستان / محنت کشوں کیلئے اقل ترین اجرتوں کو یقینی بنایا جائے گا

محنت کشوں کیلئے اقل ترین اجرتوں کو یقینی بنایا جائے گا

نئی دہلی ۔ 4 ۔ مارچ : ( سیاست ڈاٹ کام) : مرکزی وزیر لیبر بنڈارو دتاتریہ نے آج کہا کہ مزدوروں کے لیے جائز اور منصفانہ اجرتوں کی ادائیگی کو حکومت یقینی بنائے گی ۔ راجیہ سبھا میں وقفہ صفر کے دوران انہوں نے بتایا کہ نہ صرف اقل ترین اجرتیں بلکہ بہتر تنخواہوں کی ادائیگی کے لیے حکومت کوشش کرے گی ۔ ایوان میں یہ سوال کیا گیا تھا کہ سنٹرل ٹریڈ یون

نئی دہلی ۔ 4 ۔ مارچ : ( سیاست ڈاٹ کام) : مرکزی وزیر لیبر بنڈارو دتاتریہ نے آج کہا کہ مزدوروں کے لیے جائز اور منصفانہ اجرتوں کی ادائیگی کو حکومت یقینی بنائے گی ۔ راجیہ سبھا میں وقفہ صفر کے دوران انہوں نے بتایا کہ نہ صرف اقل ترین اجرتیں بلکہ بہتر تنخواہوں کی ادائیگی کے لیے حکومت کوشش کرے گی ۔ ایوان میں یہ سوال کیا گیا تھا کہ سنٹرل ٹریڈ یونینوں کے اس مطالبہ پر کہ محنت کشوں کی تنخواہوں کو موجودہ 10 ہزار روپئے سے 15 ہزار کردیا جائے ۔ حکومت نے اتفاق کیا ہے وزیر لیبر و ایمپلائمنٹ دتاتریہ نے کہا کہ اس خصوص میں کوئی وقت مقرر نہیں کیا گیا اور ٹریڈ یونینوں نے گذشتہ سال جون میں اقل ترین اجرتوں میں اضافہ کے لیے وزیر فینانس کو ایک مشترکہ میمورنڈم پیش کیا ہے اور اس مطالبہ پر حال ہی میں ان سے ( وزیر لیبر ) بھی نمائندگی کی گئی ہے ۔ جب کہ اقل ترین اجرتوں کے ایکٹ 1948 کے تحت مرکزی و ریاستی حکومتیں ورکرس

اورملازمین کی اقل ترین اجرتوں پر نظر ثانی کرسکتی ہیں ۔ انہوں نے بتایا کہ تنخواہوں کا تعین مقامی حالات ، مصارف زندگی ، ادائیگوں کی سکت ، ملازمین کی صلاحیتوں پر منحصر ہے کیوں کہ مختلف ریاستوں میں اقل ترین اجرتوں کی نوعیت جداگانہ ہے ۔ ایک اور ضمنی سوال کا جواب دیتے ہوئے مسٹر دتاتریہ نے کہا کہ منظم شعبہ میں محنت کشوں کی حقیقی تعداد کا پتہ چلانے کے لیے حکومت کی جانب سے سروے کروانے کا کوئی منصوبہ نہیں ہے جب کہ نیشنل سمپل سروے آرگنائزیشن کے زیر اہتمام کروائے گئے ایک سروے کے مطابق ملک بھر میں ورکرس کی جملہ تعداد 47 کروڑ ہے ۔ جس میں 8 کروڑ منظم شعبہ میں اور 39 کروڑ غیر منظم شعبہ میں برسرکار ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT