Thursday , December 14 2017
Home / اضلاع کی خبریں / محنت کش طبقہ کی خوشحالی کیلئے سود کیلئے دروازے کو بند کرنا ضروری

محنت کش طبقہ کی خوشحالی کیلئے سود کیلئے دروازے کو بند کرنا ضروری

ظہیرآباد /25 جنوری ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) ظہیرآباد میں کل منعقدہ اسلامی بنک کی افتتاحی تقریبکو مخاطب کرتے ہوئے جنرل سکریٹری ہیومن ویلفیر فاؤنڈیشن ریاست تلنگانہ و آندھراپردیش نے کہا کہ مسلمانوں کو سود کی لعنت سے بچانے معاشی خوشحالی لانے اور سماج میں بہتر مقام بنانے کیلئے خدمت بنک کا قیام عمل میں لایا جارہا ہے ۔ یہ محنت کش طبقات ا بنک ہے اور محنت کش طبقات کے چہروں پر مسکراہٹ لانا بنک کا مقصد ہے ۔ محنت کش افراد دن رات محنت کرتے ہیں اور اپنے محنت کی کمائی سود میں ادا کر رہے ہیں ۔ سود کے دروازے بند کرنے کیلئے یہ بنک قائم کیا گیا ۔ مسلمانوں کی تحریک کو دور کرنا اور بچوں کو تلعیم سے قریب کرنا ہے ۔ ہم نے علحدہ تلنگانہ حاصل کیا مگر ایسا تلنگانہ نہیں چاہئے جہاں کسان خودکشی کریں ۔ سودخور خوشی ہے اور محنت کش طبقہ بدحال زندگی گذارے ہم ایسا تلنگانہ چاہتے ہیں جہاں سب ترقی کریں اسی جدوجہد کا خدمت بنک ایک حصہ ہے ۔ ٹی آر ایس کے قائد مرزا وحید بیگ مقبول نے خدمت بنک کی کارکردگی کو لاجواب قرار دیتے ہوئے کہا کہ پٹن چیرو میں خدمت بنک کی شاخ قائم کرنے کیلئے تعاون کرنے کا پیشکش کریت ہوئے کہا کہ اس اس کے علاوہ حکومت کے ذمہ داروں بالخصوص وزراء سے نمائندگی کرتے ہوئے اقلیتی مالیاتی کارپوریشن سے اقلیتوں کو قرض فراہم کرنے کیلئے قومیائے ہوئے بنکوں کو ادا کرنے کیلئے جو سبسیڈی کی رقم مختص کرکے رکھی گئی ہے ۔ وہ رقم خدمت بنک کے ذریعہ مسلمانوں میں تقسیم کرنے کیلئے دباؤ ڈالا جائے گا ۔ اگر اس معاملے میں کامیابی حاصل ہوتی ہے تو اس کے مثبت نتائج برآمد ہوں گے اور غریب مسلمانوں کو آسانی سے قرض حاصل ہوگا ۔ صدر ضلع میدک ایم پی جے جناب ایم جی انور نے کہا کہ جماعت اسلامی نے مسلم معاشرے کا باریک بینی سے جائزہ لینے کے بعد بڑی ذمہ داری سے خدمت نیک پراجکٹ کا آغاز کیا ہے تاکہ غریب اور ضرورتمندوں کی خدمت بنک کے ذریعہ خدمات انجام دی جاسکے ۔ اسلام نے سود کو حرام قرار دیا ہے ۔ اس کے متبادل کے طور پر خدمت انجام دی جاسکے ۔ اسلام نے سود کو حرام قرار دیا ہے ۔ اس کے متبادل کے طور پر خدمت بنک کا قیام عمل میں لایا گیا ہے ۔ جناب محمد ریاض الدین ناظم جماعت اسلامی ہند علاقہ تلنگانہ شمالی ہند نے کہا کہ جماعت اسلامی ہند نے اسلامی نظریات کی روشنی میں خدمت بنک قائم کیا ہے ۔ یہ بنک قومیائے ہوئے بنک کا نعم الدبدل ہے ۔ ارکان بنک کے مالک ہے اور نفع میں برابر کے ذمہ دار ہے ۔ صدر ایم پی جے ظہیرآباد جناب نور الحق غوری نے مسلمانوں کو بلاخوف و خطر اس بنک کے رکن بنئے اور دوسروں کو بھی خدمت بنک کی نیٹ ورک سے جوڑے کم از کم 5 ہزار تا 50 ہزار روپئے تک خدمت ببنک میں جمع کرسکتے ہیں ۔ محمد ذکی ڈائرکٹر ہیومنٹ ویلفیر فاؤنڈیشن نے کہا کہ غریبوں کو سود کی لعنت سے نجات دلانے کیلئے خدمت بنک کا وجود عمل میں لایا گیا ہے ۔ چند عرصوں کی محنت سے خدمت بنک کا کاروبار 8 کروڑ روپئے تک پہونچ چکا ہے ۔ سکریٹری تلنگانہ یونین آف ورکنگ جرنلسٹ مسٹر عبدالقادر فیصل نے خدمت بنک کی خدمات کو ناقابل قرار دیتے ہوئے کہا کہ مسلم معاشرے کو سود کی لعنت سے نجات دلانے کیلئے جدوجہد کے حصہ کے طور پر خدمت بنک قائم کیا گیا ہے ۔ خدمت بنک کے ذریعہ اسلامک بنک سسٹم کو رائج کرنے کی کوشش کر رہے ہیں ۔ تمام لوگ بنک کی رکنیت قبول کریں اس موقع پر خدمت بنک کے ذمہ داران محمد امجد حسین ، ایم جی انور ، محمد ناظم غوری ، محمد اشفاق حسین ، محمد نعیم الدین ، محمد رفیع الدین ، محمد نصیرالدین ، محمد اقبال احمد ، محمد معراج الدین مکرم ، نور الحسن غوری ، محمد ریاض الدین ، اطہر محی الدین شاہد ، محمد معین الدین کے بشمول ظہیرآباد کے ٹی آر ایس کے سرکردہ قائدین چرنجیوی پرشاد ، چنوری لاونیا ، پی رام کرشنا ریڈی ، وجئے کمار ، کے مانک راؤ ، ڈی لکشما ریڈی ، محمد یعقوب ، محمد کلیم الدین ، محمد عمر احمد اور دیگر عوام کی کثیر تعداد موجود تھی ۔

TOPPOPULARRECENT