Saturday , February 24 2018
Home / شہر کی خبریں / محکمہ اقلیتی بہبود میں عہدیداروں کی کمی سے کارکردگی متاثر

محکمہ اقلیتی بہبود میں عہدیداروں کی کمی سے کارکردگی متاثر

سینئیر عہدیداروں کو متعین کرنے حکومت کوشاں ، فائل چیف منسٹر کی منظوری کی منتظر
حیدرآباد۔ 8 فبروری (سیاست نیوز) محکمہ اقلیتی بہبود میں دو اہم عہدوں پر تقررات سے متعلق فائل طویل عرصہ سے چیف منسٹر کی منظوری کی منتظر ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ ڈائرکٹر اقلیتی بہبود اور منیجنگ ڈائرکٹر اقلیتی فینانس کارپوریشن کے عہدوں پر تقررات کے لیے بعض ناموں کی سفارش کرتے ہوئے محکمہ نے فائل چیف منسٹر کے دفتر روانہ کی ہے۔ یہ فائل گزشتہ چند ماہ سے منظوری کی منتظر ہے جس کے باعث ڈائرکٹوریٹ آ ف اقلیتی بہبود اور اقلیتی فینانس کارپوریشن کی کارکردگی متاثر ہوئی ہے۔ محکمہ اقلیتی بہبود میں عہدیداروں کی کمی کے باعث اسکیمات پر عمل آوری متاثر ہوئی ہے۔ سید عمر جلیل نے سکریٹری اقلیتی بہبود کے عہدے پر فائز رہتے ہوئے حکومت کو تجویز پیش کی تھی کہ ڈائرکٹر اقلیتی بہبود اور منیجنگ ڈائرکٹر اقلیتی فینانس کارپوریشن کے عہدوں کے لیے دیگر محکمہ جات سے ڈپیوٹیشن پر عہدیداروں کی خدمات حاصل کی جائیں۔ انہوں نے حکومت کے مشیر برائے اقلیتی امور سے مشاورت کے بعد ایک آئی پی ایس عہدیدار اور ایک ریٹائرڈ آئی ایف ایس عہدیدار کے نام کی سفارش کی تھی۔ لیکن چیف منسٹر نے فائل کو منظوری نہیں دی۔ جلال الدین اکبر کے تبادلہ کے بعد سے ڈائرکٹر اقلیتی بہبود کا عہدہ خالی تھا اور سکریٹری کے ساتھ ساتھ ڈائرکٹر کے عہدے کی ذمہ داری عمر جلیل نبھارہے تھے۔ ڈائرکٹر اقلیتی بہبود کے تحت کئی اہم اسکیمات پر عمل آوری ہوتی ہے۔ ایسے میں مستقل عہدیدار کی عدم موجودگی سے اسکیمات کی رفتار سست ہوچکی ہے۔ اس عہدے کے لیے آندھراپردیش میں خدمات انجام دینے والے ایک سینئر آئی پی ایس عہدیدار کے نام کی سفارش کی گئی تھی۔ مرکز نے آندھراپردیش کیڈر کے عہدیدار کو تلنگانہ میں الاٹ کرنے سے انکار کردیا۔ اس کے علاوہ منیجنگ ڈائرکٹر اقلیتی فینانس کارپوریشن بی شفیع اللہ اقلیتی اقامتی اسکول سوسائٹی کے سکریٹری کی اہم ذمہ داری نبھا رہے ہیں۔ 204 اقامتی اسکولوں کے انتظامات کی نگرانی آسان نہیں لہٰذا شفیع اللہ کا زیادہ تر وقت اقامتی اسکولوں کی سرگرمیوں پر خرچ ہورہا ہے۔ لہٰذا انہیں کارپوریشن کی ذمہ داری سے سبکدوش کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔ اس عہدے کے لیے ایک ریٹائرڈ آئی ایف ایس عہدیدار کے نام کی سفارش کی گئی۔ بتایا جاتا ہے کہ چیف منسٹر کے دفتر نے ریٹائرڈ عہدیدار کے نام پر بعض اعتراضات کیے ہیں۔ تاہم قطعی فیصلہ کا اختیار چیف منسٹر کو ہے۔ آندھراپردیش کیڈر کے آئی پی ایس عہدیدار کو تلنگانہ میں تعینات کرنے کی کوششوں میں رکارٹ کے بعد تلنگانہ کے ایک مسلم آئی پی ایس عہدیدار کے نام کی سفارش کی گئی۔ بتایا جاتا ہے کہ ڈائرکٹر جنرل پولیس نے عہدیداروں کی کمی کا بہانہ بناتے ہوئے ڈپیوٹیشن پر خدمات فراہم کرنے سے معذوری ظاہر کی ہے۔ ایسے میں حکومت کو دونوں اہم عہدوں کے لیے سینئر عہدیداروں کی تلاش ہے۔ دونوں اہم عہدوں پر مستقل تقررات کی صورت میں اقلیتی بہبود کی کارکردگی اور اسکیمات پر عمل آوری کی رفتار کو بہتر بنایا جاسکتا ہے۔

TOPPOPULARRECENT