Sunday , December 17 2017
Home / شہر کی خبریں / محکمہ اقلیتی بہبود کی کارکردگی کو بہتر بنانے 2روزہ جائزہ اجلاس

محکمہ اقلیتی بہبود کی کارکردگی کو بہتر بنانے 2روزہ جائزہ اجلاس

حالیہ چند دنوں سے متعلقہ محکمہ پر عوامی ناراضگی کے پیش نظر ڈپٹی چیف منسٹر کااقدام
حیدرآباد ۔ 20۔ ستمبر (سیاست نیوز) محکمہ اقلیتی بہبود کی کارکردگی بہتر بنانے کیلئے چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ کی خواہش پر ڈپٹی چیف منسٹر و انچارج اقلیتی بہبود محمد محمود علی نے دو روزہ جائزہ اجلاس طلب کیا ہے۔ حالیہ عرصہ میں محکمہ اقلیتی بہبود کی کارکردگی سے متعلق عوام میں پائی جانے والی ناراضگی کو دیکھتے ہوئے ڈپٹی چیف منسٹر نے 25 اور 26 ستمبر کو جائزہ اجلاس منعقد کیا ہے۔ اقلیتی اقامتی اسکولوں کی کارکردگی کا جائزہ لینے کیلئے کل 21 ستمبر کو ڈپٹی چیف منسٹر و وزیر تعلیم کڈیم سری ہری کے اجلاس پر عہدیداروں کو طلب کیا گیا ۔ اس موقع پر محمد محمود علی بھی موجود رہیں گے ۔ اس اجلاس میں ریاست میں قائم کئے گئے 206 اقلیتی اقامتی اسکولوں کی کارکردگی کا جائزہ لینے کے علاوہ اسکولوں کے بارے میں ملنے والی شکایات کے بارے میں عہدیداروں سے تفصیلات طلب کی جائیں گی ۔ بتایا جاتا ہے کہ ڈپٹی چیف منسٹر نے سکریٹری اقلیتی بہبود کو ہدایت دی ہے کہ وہ جائزہ اجلاس میں ہر اسکیم پر عمل آوری کی تفصیلات اعداد و شمار کے ساتھ پیش کریں۔ گزشتہ تین برسوں میں اقلیتی بہبود کے بجٹ اور اس کے خرچ کی تفصیلات بھی طلب کی گئی ہے ۔ جاریہ سال ہر اسکیم کیلئے خرچ کردہ رقومات کے اعداد و شمار بھی اجلاس میں پیش کئے جائیں گے ۔ پہلے دن اوقافی جائیدادوں سے متعلق غور کیا جائے گا۔ صدرنشین وقف بورڈ محمد سلیم اور بورڈ کے دیگر عہدیدار اجلاس میں شریک ہوں گے ۔ حکومت کی جانب سے جاریہ اراضی سروے میں اوقافی جائیدادوں کے تحفظ کے مسئلہ پر جائزہ لیا جائے گا ۔ ڈپٹی چیف منسٹر نے بتایا کہ تمام وقف انسپکٹرس کو سروے سے استفادہ کیلئے ہدایات جاری کئے جائیں گی ۔ انہوں نے کہا کہ سروے میں مشغول عہدیداروں سے تعاون کرتے ہوئے وقف بورڈ کے انسپکٹرس کو اوقافی جائیدادوں کا تحفظ کرنا چاہئے ۔ 80 سال بعد اس طرح کا جامع سروے منعقد کیا جارہا ہے اور ریونیو ریکارڈ میں اوقافی جائیدادوں کو شامل کرنے کا یہ بہترین موقع ہے ۔ دوسرے دن کے اجلاس میں اقلیتی فینانس کارپوریشن اور دیگر اداروں کی اسکیمات پر عمل آوری کا جائزہ لیا جائے گا ۔ ڈپٹی چیف منسٹر نے کہا کہ چیف منسٹر اقلیتی بہبود کے سلسلہ میں سنجیدہ ہیں اور کسی بھی اسکیم کیلئے بجٹ کی اجرائی مسئلہ نہیں رہے گی ۔ وہ اس اجلاس میں سکریٹری فینانس کو طلب کرتے ہوئے بجٹ کی عاجلانہ اجرائی کیلئے ہدایت دیں گے۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ جائزہ اجلاس کے بعد نہ صرف اداروں کی کارکردگی بہتر ہوگی بلکہ عہدیدار باہمی تال میل کے ساتھ اسکیمات پر موثر عمل آوری کو یقینی بنائیں گے۔

TOPPOPULARRECENT