Friday , November 24 2017
Home / شہر کی خبریں / محکمہ رجسٹریشن کو صاف و شفاف بنانے حکومت کی مساعی

محکمہ رجسٹریشن کو صاف و شفاف بنانے حکومت کی مساعی

سرکاری اراضی معاملات پر چیف منسٹر کا فیصلہ ، تمام صورتحال پر گہری نظر
حیدرآباد۔/15جون، ( سیاست نیوز) وزیر آبپاشی ہریش راؤ نے کہا کہ حکومت نے رجسٹریشن ڈپارٹمنٹ کو صاف و شفاف بنانے کا فیصلہ کیا ہے تاکہ اراضیات کے رجسٹریشن میں بے قاعدگیوں کو روکا جاسکے۔ میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے ہریش راؤ نے کہا کہ گزشتہ دنوں سرکاری اراضیات سے متعلق جو معاملات منظر عام پر آئے ہیں اس کے پس منظر میں چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے محکمہ اسٹامپ اینڈ رجسٹریشن کو مکمل طور پر نقائص سے پاک بنانے کا فیصلہ کیا ہے۔ اس سلسلہ میں جلد ہی قدم اٹھائے جائیں گے۔ ہریش راؤ نے کہا کہ گزشتہ حکومتوں میں کسی بھی مقام سے رجسٹریشن کی جو اسکیم شروع کی گئی تھی اس کے باعث اس طرح کی بے قاعدگیاں منظر عام پر آئیں۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ اراضیات پر قبضہ کے معاملات کو سابقہ حکومتوں نے نظر انداز کردیا تھا جس کے نتیجہ میں غیر مجاز قابضین کے حوصلے بلند ہوئے اور عہدیداروں کی ملی بھگت کے ذریعہ سرکاری اراضیات کو ہڑپنے کی کوشش کی گئی۔ انہوں نے کہا کہ سابقہ حکومتوں کی ناکامیوں کا نتیجہ ہے کہ اراضی کے اسکام پیش آئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حالیہ عرصہ میں جو بھی معاملات منظر عام پر آئے وہ اپوزیشن یا میڈیا کا کارنامہ نہیں بلکہ خود حکومت نے اسے بے نقاب کیا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کی جانب سے منظر عام پر لائے گئے اُمور پر اپوزیشن جماعتیں سیاسی مقصد براری کیلئے کام کررہی ہیں۔ حکومت نے رجسٹریشن کے سلسلہ میں پیش آئے جن نقائص کو پیش کیا ان ہی باتوں کو اپوزیشن جماعتیں دوہرارہی ہیں۔ ہریش راؤ نے کہا کہ سرکاری اراضیات کے تحفظ کیلئے جلد ہی قانون میں ترمیم کی جائے گی۔ انہوں نے بتایا کہ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ اراضیات کے رجسٹریشن کے سلسلہ میں ہر مسئلہ کا بذات خود جائزہ لے رہے ہیں اور تمام صورتحال پر ان کی گہری نظر ہے۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس اور تلگودیشم حکومتوں کے دوران جب کبھی بھی اراضی کے معاملات منظر عام پر آئے اور عہدیداروں نے اس سلسلہ میں حکومت کو رپورٹ پیش کی تو کارروائی سے گریز کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ سابقہ حکومتوں کی غلطیوں کے اثرات آج ظاہر ہورہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ حالیہ عرصہ میں میاں پور میں جو کچھ بھی اراضی کا معاملہ پیش آیا اس میں سرکاری اراضی مکمل طور پر محفوظ ہے اور حکومت کو کوئی نقصان نہیں ہوا ہے۔ حکومت نے غیر مجاز طور پر کی گئی تمام رجسٹریشن کی کارروائیوں کو منسوخ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ اس طرح اپوزیشن جماعتوں کو سرکاری اراضیات کے بارے میں متفکر ہونے کی ضرورت نہیں۔ ہریش راؤ نے اراضی اسکام کی سی بی آئی تحقیقات کے مطالبہ کو مسترد کردیا اور کہا کہ سی بی سی آئی ڈی اس معاملہ کی جانچ کیلئے کافی ہے۔

TOPPOPULARRECENT