Saturday , November 18 2017
Home / ہندوستان / مختلف ریاستوں میں آئی ای ڈی ریکارڈ مقدار میں ضبط

مختلف ریاستوں میں آئی ای ڈی ریکارڈ مقدار میں ضبط

نکسلائیٹ زیراثر علاقوں میں کارروائی، فوج کو چوکس کردیا گیا
نئی دہلی ۔ 19 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) جملہ 1702 ترقی یافتہ دھماکو آلات (آئی ای ڈیز) جن کا جملہ وزن 6000 کیلو گرام تھا، نکسلائیٹ زیراثر 10 ریاستوں سے سال 2015ء میں دھاوؤں کے دوران ضبط کئے گئے۔ چنانچہ صیانتی محکموں نے فوج کو زیادہ چوکسی اختیار کرنے کی ہدایت جاری کردی۔ چھتیس گڑھ، جھارکھنڈ، اوڈیشہ، بہار اور مہاراشٹرا ان 10 بائیں بازو کی انتہاء پسندی کے زیراثر ریاستیں ہیں۔ مرکزی صیانتی محکموں نے ایک رپورٹ تیار کی ہے جس کے بموجب 5908 کیلو گرام وزنی، 1702آئی ای ڈیز زیراثر ریاستوں میں 2015ء کے دوران ضبط کی گئیں۔ گذشتہ سال کی بنسبت یہ حیرت انگیز اضافہ ہے اور اندیشہ ہیکہ گڑبڑ کرنے کا رجحان ہنوز جاری ہے۔ پی ٹی آئی کو حاصل ہونے والی رپورٹس کے بموجب 2014ء کے دوران 523 آئی ای ڈیز ضبط کی گئی تھیں جبکہ 2015ء میں نصف وزن کے بم ضبط کئے گئے تھے۔ 2015ء میں اعظم ترین تعداد میں ڈیٹونیٹرس یعنی 20871 ان آئی ای ڈیز کو کارآمد بنانے کیلئے استعمال کئے گئے تھے۔ انسداد نکسلائیٹ کارروائیوں میں کام کرنے والے ایک سینئر عہدیدار نے کہا کہ پہلے ساڑھے تین ماہ میں جاریہ سال آئی ای ڈی کے متعلق ہلاکتوں اور زخمیوں کی تعداد میں بے انتہاء اضافہ ہوا ہے۔ 9 فوجیوں کی جانیں ضائع ہوچکی ہیں جبکہ 13 زخمی ہوئے۔ دو کے جسمانی اعضاء خطا کردیئے گئے۔ ایسے تقریباً 250 ترقی یافتہ بم جاریہ سال ضبط ہوئے ۔ صیانتی افواج کے ارکان عملہ اور شہریوں کو آئی ای ڈیز استعمال کرتے ہوئے ماضی قریب میں حملوں کا نشانہ بنایا گیا ہے۔ مرکزی صیانتی محکموں اور سی آر پی ایف نے سخت نگرانی جاری رکھنے کی ہدایت دی ہے اور کہا ہیکہ انتہاء پسندوں کے جلسوں کا پتہ چلانے کیلئے کھوجی کتوں کی خدمات حاصل کرنے پر زور دیا ہے۔ افواج اس وجہ سے پریشان ہیں کہ انتہاء پسندی میں دن بہ دن اضافہ ہوتا جارہا ہے۔

TOPPOPULARRECENT