Monday , December 11 2017
Home / Top Stories / ’مخدوش‘ فوجی، نیم فوجی اور پولیس کی تنصیبات کی صیانتی آڈٹ، حکومت کا فیصلہ

’مخدوش‘ فوجی، نیم فوجی اور پولیس کی تنصیبات کی صیانتی آڈٹ، حکومت کا فیصلہ

نئی دہلی /15 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) تعین ِمدت کے ساتھ صیانتی آڈٹ فوج، نیم فوجی فورسیس اور پولیس کی تمام ’’مخدوش‘‘ تنصیبات کیلئے کی جائے گی۔ ایک اعلی سطح کے اجلاس میں پٹھان کوٹ دہشت گرد حملہ کے پس منظر میں ملک کی صیانتی صورتحال کا جائزہ لیتے ہوئے یہ فیصلہ کیا گیا۔ مرکزی وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ نے اجلاس کی صدارت کی، جس میں وزیر دفاع منوہر پاریکر، مشیر قومی سلامتی اجیت دوول اور دیگر صیانتی اور سراغ رسانی محکموں کے اعلیٰ عہدہ داروں نے شرکت کی، تاکہ 2 جنوری کو فضائیہ کے فوجی اڈہ پر پیش آئے حملہ جیسے واقعات کے اعادہ کا انسداد کیا جاسکے۔ سرحد پار کے دشمن عناصر سے مسلسل خطروں کے پیش نظر ضرورت ہے کہ سراغ رسانی اور انسدادی صلاحیتوں خاص طورپر ٹکنالوجی کی صلاحیتوں میں اضافہ پر زور دیا جائے۔ یہ فیصلہ کیا گیا کہ تمام فوجی، نیم فوجی اور پولیس کی ’’مخدوش‘‘ تنصیبات کے حفاظتی انتظامات کی صیانتی آڈٹ کروائی جائے، جس کی رپورٹ پیش کرنے کیلئے وقت کا تعین کیا جائے۔ حال ہی میں محکمہ سراغ رسانی کی اطلاعات سے پتہ چلتا ہے کہ جیش محمد کے 6 تا 10 دہشت گرد پاکستان سے براہ پنجاب حال ہی میں سرحد پار کرکے ہندوستان میں داخل ہوئے ہیں۔

علاوہ ازیں پنجاب پولیس کی اطلاعات کے بموجب بین الاقوامی سرحد پار کرکے ہندوستانی سرزمین میں دراندازی کرنے والے دہشت گردوں کی تعداد 15 ہوسکتی ہے۔ دہلی میں عظیم تر صیانتی انتظامات کے تحت یوم جمہوریہ تقریب سے قبل دس ہزار سے زیادہ نیم فوجی ارکان عملہ تعینات کئے گئے ہیں۔ حفاظتی انتظامات میں دہلی کے اندرا گاندھی انٹرنیشنل ایرپورٹ پر چوکسی میں شدت پیدا کردی گئی ہے۔ ایک اور اطلاع سے پتہ چلا ہے کہ دہشت گرد عناصر مختلف لوگوں کو یرغمال بنالینے کی صورتحال بھی پیدا کرسکتے ہیں۔ اندرون ملک اور بین الاقوامی پروازوں سے کہا گیا ہے کہ صیانتی انتظامات کی سطح میں اضافہ کردیا جائے۔ مسافرین کو زینے پر دوبارہ چیکنگ کے عمل سے گزارا جائے جب وہ طیارہ میں سوار ہونے والے ہوں، اس طرح دیکھا جائے گا کہ آیا اُن کے پاس کوئی ہتھیار یا کیمیائی مادہ تو موجود نہیں ہے۔ مرکزی معتمد داخلہ راجیو مہرشی، معتمد دفاع موہن کمار اور وزارت داخلہ، دفاع، نیم فوجی فورسیس کے سینئر عہدہ دار بھی اس اجلاس میں شریک تھے۔ آج کا ایک گھنٹہ طویل اجلاس ہندوستان اور پاکستان کی جانب سے معتمدین خارجہ سطح کے مذاکرات موخر کرنے کے ایک دن بعد منعقد کیا گیا ہے، جس میں پٹھان کوٹ حملہ کی تحقیقات کرنے والی پاکستان ایس آئی ٹی کو ہندوستان کے دورہ کی اجازت دینے کا فیصلہ بھی شامل ہے۔

TOPPOPULARRECENT