Monday , September 24 2018
Home / اضلاع کی خبریں / مدھول سے ڈاکٹر وینو گوپال چاری کو شکست

مدھول سے ڈاکٹر وینو گوپال چاری کو شکست

مدہول۔16مئی( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) حلقہ اسمبلی مدہول سے مسٹر جی وٹھل ریڈی کانگریس پارٹی امیدوار ایم ایل اے کو بھاری اکثریت سے کامیابی حاصل ہوئی ۔ مسٹر جی وٹھل ریڈی کے حریف رامادیوی ایم ایل اے بی جے پی امیدوار کو 14 ہزار 631 ووٹوں سے شکست کا سامنا کرنا پڑا جبکہ ٹی آر ایس پارٹی ایم ایل اے امیدوار کو تیسرے مقام پر یعنی ڈاکٹر ایس وینو گوپال چار

مدہول۔16مئی( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) حلقہ اسمبلی مدہول سے مسٹر جی وٹھل ریڈی کانگریس پارٹی امیدوار ایم ایل اے کو بھاری اکثریت سے کامیابی حاصل ہوئی ۔ مسٹر جی وٹھل ریڈی کے حریف رامادیوی ایم ایل اے بی جے پی امیدوار کو 14 ہزار 631 ووٹوں سے شکست کا سامنا کرنا پڑا جبکہ ٹی آر ایس پارٹی ایم ایل اے امیدوار کو تیسرے مقام پر یعنی ڈاکٹر ایس وینو گوپال چاری سابق رکن اسمبلی مدہول جو کہ ان کا دسواں الیکشن تھا جی وٹھل ریڈی کے مقابلہ میں 19ہزار 595 ووٹ سے ناکامی کا سامنا کرنا پڑا ۔ واضح رہے کہ رکن پارلیمنٹ امیدوار ٹی آر ایس مسٹر گڈم ناگیش کانگریس پارٹی کے نریش ایم پی امیدوار کو ایک لاکھ 37ہزار 152 ووٹوں سے شکست دی جس سے اس بات کا اندازہ ہوتا ہیکہ ٹی آر ایس پارٹی سے عوام ناراض نہیں تھی بلکہ مسٹر وینو گوپال چاری کا گھمنڈ اور ناقص کارکردگی کی وجہ سے عوام نے ان کو تیسرے مقام پر پہنچا دیااور بی جے پی کی لہر نے راما دیوی ایم ایل اے کو دوسرے مقام پر رکھا ۔ اسطرح حلقہ اسمبلی مدہول میں مسٹر جی وٹھل ریڈی نے کانگریس پارٹی کا جھنڈا لہرا دیا ۔ واضح رہے کہ 2005ء کے عام انتخابات میں مسٹر جی وٹھل ریڈی کو کانگریس پارٹی کا ٹکٹ نہ دینے کی وجہ سے پرجا راجیم پارٹی سے انہوں نے مقابلہ کیا تھا اور 183ووٹوں سے مسٹر چاری سے شکست کھائیتھی ۔ عوام کی کراسنگ ووٹوں کی وجہ سے جیتنے والے مسٹر چاری نے گذشتہ پانچ سالوں میں عوام کے دل میں کوئی مقام نہیں بنایا بلکہ جو کچھ بھی ووٹ ان کو حاصل ہوئے وہ صرف پارٹی کی وجہ سے حاصل ہوئے ہیں ۔ اس طرح حلقہ اسمبلی مدہول میں مسٹر جی وٹھل ریڈی کانگریس پارٹی کو 62939 ووٹ حاصل ہوئے ۔ شریمتی راما دیوی بی جے پی امیدوار 48308 ووٹ ٹی آر ایس مسٹر وینو گوپال چاری کو 43344 ووٹ بی ایس پی امیدوار 3682 ووٹ ‘ شیوسینا کو 1086 ووٹ ‘ آزاد امیدوار لالو ٹائے کو 963 ووٹ حاصل ہوئے۔ حلقہ مدہول سے 6امیدواروں نے مقابلہ کیا جس میں جی وٹھل ریڈی کو بہترین کامیابی حاصل ہوئی جس پر بھینسہ مدہول کی بیرکنٹالہ تاٹور لوکشورم کے مسلمانوں میں کافی خوشی دیکھی گئی ۔ ایسا محسوس ہورہا تھا کہ مسٹر جی وٹھل ریڈی کی کامیابی نہیں بلکہ مدہول کے مسلمانوں کی کامیابی ہے ۔ واضح رہے کہ حلقہ مدہول میں کانگریس پارٹی کی کوئی لہر نہیں تھی بلکہ جی وٹھل ریڈی کی شخصیت نے ان کو کامیابی سے ہمکنار کیا ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT