Saturday , May 26 2018
Home / ہندوستان / مدھیہ پردیش میں افیون کی اسمگلنگ کیلئے امبولنس گاڑیوں کا استعمال؟

مدھیہ پردیش میں افیون کی اسمگلنگ کیلئے امبولنس گاڑیوں کا استعمال؟

بھوپال ، 9 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) مدھیہ پردیش کے اضلاع مندسور، نیمچ اور رتلام سے پڑوسی راجستھان اور دیگر ریاستوں کو افیون ، پوست و خشخاش کی مختلف شکلوں میں اسمگلنگ کیلئے امبولنس گاڑیوں کو استعمال کئے جانے کا مسئلہ خود ریاست میں برسراقتدار بی جے پی کے لیجسلیٹرز نے اُٹھایا ہے۔ مندسور ایم ایل اے یشپال سنگھ سیسوڈیہ نے یہ معاملہ ریاستی اسمبلی میں وقفہ صفر کے دوران تحریک توجہ دہانی کے ذریعے اٹھایا۔ انھوں نے الزام عائد کیا کہ ایم پی کے تین اضلاع (راجستھان سے متصل) میں امبولنس گاڑیوں کا استعمال راجستھان اور دیگر ریاستوں کو پوست اور بھوسی کی اسمگلنگ کیلئے کیا جارہا ہے۔ ’’مندسور کے ڈسٹرکٹ ہاسپٹل میں محض دو امبولنس گاڑیاں ہیں، جبکہ اسی ضلع میں چار بڑے خانگی دواخانوں میں کئی کئی امبولنس گاڑیاں دستیاب ہیں۔ لیکن اگر آپ اس ٹاؤن میں ٹمپو ٹیکسی اسٹانڈز کو جائیں تو آپ کو آسانی سے کئی گاڑیاں بشمول بولیرو مل جائیں گے جو امبولنس کے طور پر سرویس فراہم کرنے تیار ملیں گے۔‘‘ سیسوڈیہ کی فکرمندی سے اتفاق کرتے ہوئے بی جے پی لیجسلیٹر راجیندر پانڈے نے دعویٰ کیا کہ بڑے ڈرگ اسمگلرز کے خلاف کارروائی کرنے کی بجائے پولیس صرف غریب لوگوں کو پکڑ رہی ہے، جو اس دھاندلی کا معمولی حصہ ہوتے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ پولیس والوں اور کئی معروف لوگوں کے درمیان گٹھ جوڑ ہے۔ ان لوگوں میں سے کئی مقامی سیاسی لیڈر ہوتے ہیں، جو روز بہ روز بڑھتی منشیات کی تجارت کو بڑھاوا دے رہے ہیں۔ ایک اور بی جے پی لیڈر اور نیمچ ایم ایل اے دلیپ سنگھ پریہار نے دعویٰ کیا کہ افیون اور پوست کے اسمگلرز جون 2017ء کے دوران اس خطہ میں چلائی گئی کسانوں کی پُرتشدد تحریک کے پس پردہ کارفرما رہے۔ بی جے پی رکن اسمبلی اوم پرکاش سکلیچا نے الزام عائد کیا کہ نارکوٹک اسمگلنگ پولیس کی سرپرستی کے بغیر نہیں چل سکتی، جس میں پولیس اسٹیشن اِنچارج سے لے کر اے ایس پی رتبہ والے عہدہ دار تک ملوث رہتے ہیں۔ ’’کیا اس طرح کے پولیس عہدیداران کا باری باری کی اساس پر تبادلہ کیا جائے گا؟‘‘ سابق ریاستی وزیر اور بی جے پی رکن اسمبلی کیلاش چاؤلہ نے حکومت سے پوست و متعلقہ اشیاء کی اسمگلنگ کے بنیادی سبب کا جائزہ لینے کی اپیل کی ہے۔ بی جے پی لیجسلیٹرز کی تشویش پر بیان دیتے ہوئے وزیر داخلہ بھوپیندر سنگھ نے یقین دلایا کہ محکمہ جاتِ داخلہ اور فینانس کی میٹنگ کو عنقریب طلب کی جائے گی۔ بھوپیندر سنگھ نے ابتداء میں بیان دیا تھا کہ ایسے کوئی معاملے علم میں نہیں آئے کہ ریاست میں نارکوٹک اسمگلنگ کیلئے امبولنس گاڑیوں کو استعمال کیا جارہا ہے۔

TOPPOPULARRECENT