Saturday , December 15 2018

مدھیہ پردیش میں ایک چھ سال کی معصوم کے ساتھ عصمت ریزی کا واقعہ

عہدیداروں کا کہنا ہے کہ جمعرات کی اولین ساعتوں میں یہ واقعہ پیش آیا اور اس کی نعش ایک شادی کے قریب واقع جھاڑیوں سے برآمد کی گئی تھی ‘ جہاں پر اپنے گھر والوں کے ساتھ معصوم گئی ہوئی تھی۔
گولیار۔جمعہ کے روز پولیس افسروں نے بتایا کہ کامپو شہر علاقے میں نامعلوم لوگوں نے ایک چھ سالہ معصوم کی عصمت کو تار تار کرنے کے بعد اس کو جان سے ماردیا۔

عہدیداروں کا کہنا ہے کہ جمعرات کی اولین ساعتوں میں یہ واقعہ پیش آیا اور اس کی نعش ایک شادی کے قریب واقع جھاڑیوں سے برآمد کی گئی تھی ‘ جہاں پر اپنے گھر والوں کے ساتھ معصوم گئی ہوئی تھی۔

افسروں کا کہنا کہ ’’ شادی خانہ کے باہر اپنے گھر والوں کے ساتھ متاثرہ محو خواب تھی‘ نصف شب کے دوران شدت کی پیاس کی وجہہ سے وہ بیدار ہوئی۔ اپنی پیاس بجھانے کے لئے وہ پانی کے مقام پر گئی تھی‘‘۔

پولیس نے مزیدکہاکہ ’’ جب وہ واپس نہیں ائی تو گھر والوں نے پریشانی کے عالم میں اس کی تلاش شروع کردی‘ مگر اس کی تلاش میں وہ ناکام رہے‘‘۔ اس کے بعد وہ لوگ پولیس سے رجوع ہوئے۔

تحقیقات کرنے والی ٹیم اور متاثرہ کے گھر والوں نے سی سی ٹی وی فوٹیج دیکھنے کے بعد ایک روز قبل معصوم کی نعش کو شادی کے قریب واقع جھاڑیوں سے برآمد کیا۔ان کا کہنا ہے کہ ’’ ملزمین نے پہلی معصوم کا جنسی استحصال کیا پھر بعد میں اس کا گلا دبا کر جان لے لی‘‘ ۔

ایس پی گولیار نونیت بھاسن نے کہاکہ ملزمین کی گرفتاری کے لئے پولیس کی ایک ٹیم تشکیل دی گئی ہے۔ ایس پی نے مزیدکہاکہ ملزمین کے خلاف ائی پی سی اور پی او سی ایس او ایکٹ کے مختلف سیکشنوں کے تحت ایک کیس درج کرنے کے بعد تحقیقات کی جارہی ہے۔

TOPPOPULARRECENT