Tuesday , December 18 2018

مدھیہ پردیش میں شادی شدہ خاتون کی عصمت ریزی ، برہنہ گشت

رائیسن ۔ 19 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) مدھیہ پردیش کے ضلع رائیسن کے تاریخی ٹاؤن سانچی کے قریب کاچی کنکھیڑا موضع میں ایک 22 سالہ خاتون کی نہ صرف عصمت ریزی کی گئی بلکہ اسے برہنہ گشت بھی کروایا گیا۔ ملزم سودھان سنگھ 40 سالہ نے خاتون کی دو دن قبل عصمت ریزی کی جبکہ وہ ضرورت سے فارغ ہورہی تھی۔ اس واقعہ کو ظاہر نہ کرنے کی دھمکی دی گئی۔ تاہم خاتون نے اح

رائیسن ۔ 19 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) مدھیہ پردیش کے ضلع رائیسن کے تاریخی ٹاؤن سانچی کے قریب کاچی کنکھیڑا موضع میں ایک 22 سالہ خاتون کی نہ صرف عصمت ریزی کی گئی بلکہ اسے برہنہ گشت بھی کروایا گیا۔ ملزم سودھان سنگھ 40 سالہ نے خاتون کی دو دن قبل عصمت ریزی کی جبکہ وہ ضرورت سے فارغ ہورہی تھی۔ اس واقعہ کو ظاہر نہ کرنے کی دھمکی دی گئی۔ تاہم خاتون نے احتجاج کیا اور عوام کو بتایا تو اسے سر کے بال سے کھینچ کر گھر سے باہر لایا گیا اور برہنہ کرکے گشت کروائی گئی۔ پولیس نے کیس درج کرکے خاطی کو گرفتار کرلیا اور اسے عدالت کے سامنے پیش کیا گیا جہاں جج نے عدالتی تحویل میں دے دیا ہے۔

شکتی ملزاجتماعی عصمت ریزی، آج عدالتی فیصلہ کا امکان
ممبئی ۔ 19 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) شکتی ملز اجتماعی عصمت ریزی مقدمات کے سلسلہ میں سیشن کورٹ امکان ہیکہ کل اپنا فیصلہ سنائے گی۔ اسپیشل پبلک پراسیکیوٹر اجول نکم نے کہا کہ عدالت کے فیصلہ کا کل امکان ہے۔ شکتی ملز احاطہ میں عصمت ریزی کے دو واقعات پیش آئے تھے جن کے خلاف ملک بھر میں شدید برہمی اور غم و غصہ کا اظہار کیا گیا تھا۔ پہلا مقدمہ 22 سالہ میگزین فوٹو جرنلسٹ کی اجتماعی عصمت ریزی سے متعلق ہے جو 22 اگست 2013ء کو تفویض کردہ کام کے سلسلہ میں اپنے ساتھی کے ساتھ شکتی ملز گئی تھی۔ دوسرا مقدمہ 18 سالہ ٹیلیفون آپریٹر کا ہے جس کی 31 جولائی 2013ء کو مبینہ طور پر اجتماعی عصمت ریزی کی گئی تھی۔ سماعت کے دوران اسپیشل پراسیکیوٹر اجول نکم نے ان واقعات کو وحشتناک، ظالمانہ اور بے رحمی کے ساتھ کیا گیا جنسی حملہ قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ دو بے یار و مددگار اور بے بس لڑکیوں کو ہوس کا نشانہ بنایا گیا ہے۔ دفاعی وکلاء نے دوسری طرف یہ استدلال پیش کیا کہ استغاثہ کا بیان محض فرضی ہے اور وہ کسی ثبوت کے بغیر ایسا کہہ رہے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT