مدھیہ پردیش میں کانگریس کا ممکنہ حلیفوں سے رابطہ

۔230رکنی اسمبلی میں کانگریس کو سادہ اکثریت ملنے کا امکان ، بی جے پی سے سخت مقابلہ
بھوپال ۔ 11ڈسمبر ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) مدھیہ پردیش میں تمام 230 اسمبلی نشستوں کے رجحانات کی اساس پر برسراقتدار بی جے پی کے مقابل کامیابی کو محسوس کرتے ہوئے کانگریس نے چھوٹی پارٹیوں کے قائدین کے ساتھ ساتھ آزاد امیدواروں سے بھی رابطہ شروع کردیا ہے تاکہ سادہ اکثریت میں کمی پڑنے پر حکومت تشکیل دینے میں کوئی مشکل نہ ہونے پائے ۔ پارٹی کے ذریعہ نے آج کہا کہ کانگریس قائدین نے بہوجن سماج پارٹی ، سماج وادی پارٹی ، گونڈوانا گن تنتر پارٹی اور آزاد امیدواروں سے رابطہ قائم کیا ہے ۔ تازہ ترین رجحانات کے مطابق کانگریس 115 نشستوں اور بی جے پی 105نشستوں پر آگے ہیں ۔ ذرائع نے کہا کہ ایم پی کانگریس کے سربراہ کمل ناتھ اور پارٹی کی انتخابی مہم کمیٹی کے سربراہ جیوتر آدتیہ سندھیا نے ممکنہ حلیفوں سے ربط قائم کیا ہے ۔ کمل ناتھ کا بی ایس پی سربراہ مایاوتی اور ایس سی سربراہ اکھلیش یادو کے علاوہ جی جی پی قائدین کے ساتھ ربط قائم ہے ۔ جی جی پی کا ایک امیدوار ایک حلقہ سے آگے ہے ۔ بی ایس پی کو چار مقامات پر سبقت ہے جبکہ ایس پی دو حلقوں میں آگے ہے ۔ مایاوتی نے انتخابات سے قبل ریاست میں اتحاد کیلئے کانگریس کے اشاروں کو نظرانداز کردیا تھا ۔ ذرائع سے کہا کہ سندھیا نے آزاد امیدواروں سے رابطہ کیا ہے جو ووٹوں کی گنتی میں آگے چل رہے ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT