Wednesday , June 20 2018
Home / اضلاع کی خبریں / مدہول میں شرپسندی واقعہ کی تحقیقات میں سست روی

مدہول میں شرپسندی واقعہ کی تحقیقات میں سست روی

مد ہول۔ 16 فبروری (سیاست ڈسٹر کٹ نیوز ) جامع مسجد مد ہول میں مردہ خنزیرکو نامعلوم شرپسندوں کی جانب سے پھینک دئیے جانے کے واقعہ کے بعدپولیس کی جانب سے اس سمت میںخاطر خواہ عدم پیشرفت کے بعد آج شہر مدھول کے مسلم قائدین پر مشتمل نمائندہ وفد نے ضلع مستقر عادل آباد پہنچ کر ضلع سپرنٹنڈنٹ آف پولیس ڈاکٹر گجاراؤ بھوپال سے ملاقات کرتے ہوئے اس مذموم حرکت کے ذمہ دار شرپسندوں کو جلد از جلد گرفتار کرنے نیز انھیں سخت سے سخت سزائیں دینے کا مطالبہ کیا۔ ضلع ایس پی سے ملاقات کے دوران قائدین نے بتایا کہ مدھول ہمیشہ ہی سے امن کا گہوارہ رہا ہے تاہم چند شرپسند عناصراس پر امن فضاء کو مکدر کرنے کی مذموم کوشش کررہے ہیں اور ایسے سماج دشمن عناصر کی جلد از جلد گرفتاری عمل میں نہیں لائی جاتی ہے تب آئندہ بھی وہ اس قسم کی حرکتوں کے ذریعہ سے ماحول کو مکدر کرنے کی سازش رچ سکتے ہیں ۔ہذا ضلع پولیس کی ذمہ داری ہے کہ وہ شہر کے ماحول کو پر امن بنانے اور بھائی چارگی کی فضاء کو برقرار رکھنے کے لئے ان عناصر کی جلد از جلد گرفتاری عمل میں لائے اور ملزمین کو سخت سزائیں دی جائیں۔وفد نے بتایا کہ ضلع ایس پی نے تمام تر تفصیلات کی بغور سماعت کی اور تیقن دیا کہ بہت جلد ملزمین کو گرفتار کرلیا جائے گا اورعوام کی ذمہ داری ہے کہ وہ امن و امان کو برقرار رکھیں۔ وفد میں موظف چیف انجنیئر محکمہ آبپاشی حکومت آندھرا پردیش و متولی جامع مسجد مدھول قاضی انعام الحق، ریاستی صدر ویلفیر پارٹی آف انڈیا ملک معتصم خان ، محمد مظہر الحق عادل ، خواجہ عبدل ولی، سمیع اللہ خان سابق سرپنچ مدھول، افروز خان صدر کانگریس پارٹی مدھول منڈل، وصی الدین خالد پٹیل، اعجاز الدین سابق صدر نشین منڈل پریشد، حافظ عبدالقوی، شکیل احمد خان، عمران احمد خان، عبدالہادی، حافظ شیخ نظام الدین امام جامع مسجد مدھول کے علاوہ ضلعی صدر ویلفیر پارٹی شفیع اللہ خان، محمد امجد علی و دیگر موجود تھے۔

TOPPOPULARRECENT